شمالی زون کے فوجی کمانڈر سرینگرمیں گورنرکیساتھ ملاقات کے دوران سیکورٹی صورتحال پر تبادلہ خیال

سرینگر/ یو پی آئی / لفٹنٹ جنرل رنبیر سنگھ آرمی کمانڈر شمالی کمانڈ نے کل یہاں راج بھون میں گورنر کیساتھ ملاقات کی، اس دوران امن وقانون کی صورتحا ل پر تبادلہ خیال کیاگیا، تفصیلات کے مطابق /جاری صفحہ نمبر۱۱پر
 ناردرن فوجی کمانڈر نے وادی کے دو روزے دورے پر سرینگر وار دہوئے جس دوران بادامی باغ فوجی کیمپ میں کشمیر کی تازہ ترین سیکورٹی صورتحال کا اعلیٰ سطحی میٹنگ کے دوران جائزہ لیا گیا ۔ جنوبی کشمیر اور بادامی باغ میں الگ الگ میٹنگوں سے خطاب کے دوران نار درن کمانڈر نے فورسز اہلکاروں پر عسکریت پسندوں کے ساتھ جھڑپوں کے دوران ’’ایس او پیز ‘‘ پر من عن عملدرآمد کرنے پر زور دیا۔ ناردرن کمانڈر لفتنٹ جنرل ’’ رنبیر سنگھ دو روزہ دورے پر سرینگر وارد ہوئے ہیں۔ معلوم ہوا ہے کہ سرینگر پہنچتے ہی ناردرن آرمی کمانڈر نے بادامی باغ سرینگر میں ریاست خاص کرو ادی کشمیر کی تازہ ترین سیکورٹی صورتحال پر فوجی کمانڈروں کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے ناردرن کمانڈر نے کہاکہ لائن آف کنٹرول اور حد متارکہ پر پچھلے کئی روز سے دراندازی کے واقعات میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ لائن آف کنٹرول پر دراندازی کرنے والے عسکریت پسندوں کو متحرک فوجی اہلکاروں نے مار گرایا ہے۔ بادامی باغ سرینگر میں سیکورتی صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد ناردرن کمانڈر خصوصی ہیلی کاپٹر کے ذریعے جنوبی کشمیر پہنچے اس موقعے پر کور کمانڈر لفٹنٹ جنرل اے کے بٹ بھی فوجی کمانڈر کے ہمراہ موجود تھے۔ نار درن کمانڈر نے جنوبی کشمیر میں فوج کی تیاریوں کا جائزہ لیا اور سرگرم عسکریت پسندوں کے خلاف سیکورٹی فورسز کی جانب سے چلائے جار ہے ہیں آپریشن آل آوٹ پر بھی فوجی کمانڈروں سے بات کی ہے۔ انہوںنے کہاکہ عسکریت پسندوں کے ساتھ جھڑپوںکے دوران فوجی اہلکار پیشہ وارانہ صلاحیتوں کو بروئے کار لاکر جوابی کارروائی کرتے ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ عسکریت پسندوں کے ساتھ جھڑپوں کے دوران فورسز اہلکار ایس او پیز پر من وعن عملدرآمد کر رہے ہیں جس کے نتیجے میں شہری ہلاکتوں میں کمی واقع ہوئی ہے۔

 ناردرن کمانڈر نے فوجی آفیسران پر زور دیا کہ وادی کشمیر میں حالات کو معمول پر لانے کیلئے فورسز اہلکار اپنی خدمات خوش اسلوبی کے ساتھ انجام دے رہے ہیں۔ ۔ انہوںنے کہاکہ سرگرم جنگجوئوں کے خلاف آپریشن آل آوٹ جاری رہے گا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں