شوپیان میں نامعلوم اسلحہ برداروں کے ہاتھوں حریت کارکن کا قتل

سرینگر//﴿آفتاب ویب ڈیسک ﴾  جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان میں جمعرات کو نامعلوم اسلحہ برداروں نے حریت کانفرنس کے ایک کارکن کو گولی مار کر قتل کردیا۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ نامعلوم اسلحہ برداروں نے شوپیان کے میمندر میں حریت کارکن طارق احمد گنائی پر ان کے گھر کے نزدیک گولیاں چلائیں۔ انہوں نے بتایا کہ گنائی کو نزدیکی اسپتال لے جایا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا۔ بتایا جارہا ہے کہ طارق احمد ایک سابق جنگجو تھا۔ رپورٹوں کے مطابق طارق احمد بزرگ علیحدگی پسند راہنما سید علی گیلانی کی قیادت والی حریت کانفرنس ﴿گ﴾ کی ذیلی جماعت مسلم لیگ کے ضلع صدر شوپیان تھے۔ ریاستی پولیس نے اس ہلاکت کے لئے جنگجوؤں کو ذمہ دارا ٹھہرایا ہے۔ یہ وادی میں رواں برس نامعلوم اسلحہ برداروں کے ہاتھوں حریت ﴿گ﴾ کے کسی حریت کارکن کے قتل کا تیسرا واقعہ ہے۔ 8 ستمبر کو نامعلوم اسلحہ برداروں نے سوپور کے مضافاتی علاقہ بومئی میں 45 سالہ حکیم الرحمان سلطانی ولد مرحوم مفتی نظام الدین سلطانی ساکنہ ریشی پورہ بومئی کو قتل کیا۔ اس سے قبل رواں برس 13 فروری کو وسطی کشمیر کے ضلع بڈگام میں محمد یوسف راتھر عرف یوسف ندیم کو گولی مار کر قتل کیا گیا۔ یہ دونوں کارکن حریت کانفرنس ﴿گ﴾ سے وابستہ تھے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں