نکسل متاثر گاؤں میں ووٹروں سے زیادہ پولیس کی تعداد

بیجاپور﴿یواین آئی﴾چھتیس گڑھ کے ضلع بیجاپور میں نکسل متاثر کئی گاؤں ایسے ہیں،جہاں ووٹروں سے زیادہ تعداد سکیورٹی اہلکاروں کی ہے ،جو ووٹروں کی حفاظت کے لئے لگائے گئے ہیں۔سرکاری اطلاع کے مطابق ضلع کی بھوپال پٹنم تحصیل کے مٹی مارکا پولنگ بوتج کا نام بدل کر باڈلا گاؤں کردیا گیا ہے ۔اسی طرح نیتی واڑہ کے 44ووٹروں کے لئے ،اور نیتی کاکلر کے 55ووٹروں کے لئے بھوپال پٹنم میں پولنگ بوتھ بنایا گیا ہے ۔یہاں ووٹروں کو سات کلو میٹر پیدل چل کر ووٹنگ کرنی پڑے گی۔حالانکہ دونوں گاؤں کے ووٹروں کوبھوپال پٹنم میں آباد کرنے کی بات کہی گئی ہے ،اس کے باوجود کئی خاندان نیتی کاکلر میں مقیم ہیں۔یہاں کے 25اور نیتی واڑہ کے 19ووٹرسات کلومیٹر تک پیدل چل کر ووٹ دینے آئیں گے ۔مٹی مارکا الیکشن ٹیم کو دو دن پہلے روانہ کیا جائے گا۔بیجا پور اسمبلی حلقے میں 15سے زیادہ گاؤں ایسے ہیں ،جہاں الیکشن ٹیم کو 15سے 20کلومیٹر کی دوری پیدل چل کر طے کرنی ہوگی،جس میں بیتابوگڑا،مگنار،چھوٹے تمنار،بیریا بھومی،ایدیر ،کاندل نار ،باکیل ،تھلتھلی گاؤں شمال ہیں۔ان علاقوں میں سینٹرل ریزرو فورس کی کئی بٹالین تعینات کی جائیں گی اور ان الیکشن ٹیموں پر ڈرون سے نگرانی کی جائے گی۔سکیورٹی کے اعتبار سے یہ بہت حساس علاقہ ہے ۔بستر رینج کے پولیس انسپیکٹر جنرل ویویک آنند نے بتایا کہ باہر سے آنے والی سکیورٹی ٹیموں کو سب سے زیادہ خطرہ یہاں کی بارودی سرنگوں سے ہے۔نکسلیوں نے سکیورٹی دستوں کونقصان پہنچانے کیلئے جگہ جگہ آئی ای ڈی لگائی ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں