بارہمولہ میں کتوں کی قہرانگیزی،درجنوں شہریوں کوکیالہولہان کئی خواتین سمیت50افرادزخمی ،اسپتال میں علاج جاری

بارہمولہ::کے این این/شمالی قصبہ بارہمولہ کے کانٹھ باغ علاقہ میں منگل کی صبح اُسوقت خوف وہراس کی لہردوڑگئی جب یہاں نے کتوں نے الگ الگ مقامات پرکئی خواتین اوربچوں سمیت لگ بھگ50افرادکوکاٹ کرزخمی کردیا۔اس دوران کتوں کے حملوں میں زخمی ہوئے شہریوں کی چیخ وپکارسن کرلوگ گھروں سے باہرآئے اورانہوں نے زخمی خواتین اوردیگرافرادکونزدیک ہی واقع ضلع اسپتال بارہمولہ منتقل کیا۔ بارہمولہ میونسپل کونسل کی لاپرواہی اورغفلت شعاری کی وجہ سے اس شمالی قصبہ کے سبھی22وارڈوں میں رہنے والے لوگوں کومختلف نوعیت کے روزمرہ مشکلات درپیش ہیں ،اوران میں سب سے بڑی مشکل سبھی بستیو ں ،محلہ جات اورکالونیوں میں درجنوں کی تعدادمیں پرورش پارہے کتوں کے جھنڈہیں ،جنہوں نے شہریوں کاجیناحرام کررکھاہے ۔ڈپٹی کمشنرآفس اورمیونسپل کونسل بارہمولہ کے دفترسے مشرق کی جانب محض آدھ کلومیٹرفاصلے پرواقع کانٹھ باغ علاقہ میں منگل کی صبح کتوں نے ایسی ہڑبونگ ودہشت مچادی کہ کچھ منٹوں میں ہی کتوں کے حملوں میں لگ بھگ50مقامی افرادزخمی ہوگئے جن میں بزرگ مردوزن ،نوجوان اورکئی اسکولی بچے بھی شامل ہیں ۔کتوں نے ایسی دہشت مچادی کہ اسکول یاامتحان دینے کیلئے جانے والے طلاب گھروں میں سہم کررہ گئے ۔مقامی لوگوں نے بتایاکہ منگل کی صبح کانٹھ باغ کی پرانی بستی اورنزدیک ہی قائم نئی کالونی میں مختلف مقامات پرکتوں نے گھروں سے باہرآنے والے افرادکواپنانشانہ بنایا۔انہوں نے کہاکہ علی الصبح گردوارے جانے والی سکھ فرقے سے تعلق رکھنے والی کئی خواتین اوردیگرافرادکوکتوں نے حملے کرکے کاٹا،اوریہ سبھی افرادلہولہا ن ہوگئے ۔انہوں نے کہاکہ بھوکے جنگلی جانوروں کی طرح کتوں نے بعدازاں مزیددرجنوں ایسے افرادکوبھی کاٹ کرزخمی کردیاجوناشتے کیلئے دودھ روٹی یادوسرے کسی کام سے گھروں سے نکلے تھے ۔مقامی لوگوں نے اندیشہ ظاہرکیاکہ عام لوگوں کوکاٹنے والاکتاشایدپاگل تھاجس نے مختلف مقامات پرراہ چلتے لوگوںکواپنانشانہ بنایا۔آوارہ کتوں یاپاگل کتے کے شکاربنے سبھی زخمی افرادکوفوری طورضلع اسپتال بارہمولہ پہنچایاجہاں بیک وقت درجنوں زخمی پہنچنے سے اودھم مچ گئی اوراسپتال میں ڈیوٹی پرتعینات ڈاکٹراوردیگرملازمین بھی زخمیوں کی مرہم پٹی کرنے لگے ،جسکے بعدیہاں لائے گئے سبھی زخمیوں کومخصوص انجکشن لگائے گئے ۔اسپتال ذرائع نے بتایاکہ یہاں لگ بھگ45زخمیوں کولایاگیاجن میں فاروق احمدشیخ۔ ستندرکور،پپوسنگھ بلبیرسنگھ ، غلام احمد، ناظم ، مدثر، جمشیداحمد،محمدالطاف ، منظوربٹ ، غلام نبی ، ثنائ اللہ ، عرفات ، فردوس احمد، شہزادہ، محمدیوسف ، نثاراحمد ، شبیراحمد ، مدثراحمد، محمداقبال، سمیراحمد، ریاض احمد، عادل صوفی اورنسیمہ بانوبھی شامل ہے۔ذرائع نے بتایاکہ یہاں لائے گئے بیشترزخمیوں کی ٹانگوں کوکتوں یاپاگل کتے نے کاٹ کرلہولہان کیاتھا۔انہوں نے کہاکہ سبھی زخمیوں کی مرم پٹی کی گئی اوراُنکومخصوص انجکشن لگائے گئے ۔اسبارے میں چیف میڈیکل آفیسر بارہمولہ ڈاکٹر بشیراحمد چالکونے بتایاکہ ضلع اسپتال بارہمولہ سمیت بارہمولہ ضلع کے مختلف علاقوں میں قائم سبھی سرکاری اسپتالوں کے حکام کویہ سخت ہدایت دی گئی کہ وہ اپنے یہاں ہنگامی صورتحال میں درکارویکسین اورانجکشن خاطر خواہ مقدارمیں ہمہ وت دستیاب رکھیں ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں