سانبورہ اور وچھورہ پلوامہ میں جنگجو مخالف آپریشن وچھورہ میں نوجوان کی ہڈی پسلی ایک کردی گئی

سرینگر/ یو پی آئی / وادی میں شبانہ جنگجو مخالف آپریشن جاری سانبورہ اور وچھورہ پلوامہ میں سیکورٹی فورسز نے گھر گھر تلاشی لی جبکہ وچھورہ پلوامہ میں ایک نوجوان کی ہڈی پسلی ایک کردی گئی ۔ادھر شوپیاں میں چھاپہ مار کارروائی کے دوران کئی نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا۔ عسکریت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد سیکورتی فورسز نے درمیانی رات کو سانبورہ پلوامہ میں جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا جس دوران گھر گھر تلاشی لی گئی ۔ مقامی ذرائع نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز نے تلاشی کے دوران مکینوں سے پوچھ تاچھ بھی /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
کی ۔ ذرائع نے بتایا کہ فوج ، پولیس اور سی آر پی ایف کی مشترکہ ٹیم نے کئی گھنٹوں تک تلاشی لی تاہم اس دوران کسی کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی ۔ ادھر فورسز نے پلوامہ کے ہی وچھورہ گائوں کو محاصرے میں لے کر تلاشی لی جس دوران طاریق احمد شیخ نامی نوجوان کے گھر پر چھاپہ ڈالا گیا ۔ لواحقین نے الزام لگایا کہ فورسز اہلکاروں نے طاریق احمد کی ہڈی پسلی ایک کردی جس کو زخمی حالت میں صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ منتقل کرنا پڑا۔ لواحقین کا مزید کہنا تھا کہ فورسز اہلکاروں نے طاریق احمد کی کئی گھنٹوں تک مارپیٹ کی جس کی وجہ سے وہ بے ہوش ہو گیا ۔ ادھر شوپیاں میں چھاپہ مار کارروائی کے دوران کئی نوجوانوں کو گرفتار کرنے کی اطلاعات موصول ہوئی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ شوپیاں کے شگن گائوں میں سیکورٹی فورسز نے تلاشی کے دوران کئی مشتبہ نوجوانوں کو حراست میں لے کر اُن سے پوچھ تاچھ شروع کی ہے۔دفاعی ذرائع کے مطابق عسکریت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد سیکورٹی فورسز نے سانبورہ اور وچھورہ پلوامہ گائوں میں جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا تاہم اس دوران کسی کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی ۔ وچھورہ پلوامہ میں نوجوان کو ہڈی پسلی ایک کرنے کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے دفاعی ذرائع نے بتایا کہ لواحقین کی جانب سے لگائے جانے والے الزامات من گھڑت اور حقیقت سے بعید ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں