لیبیا کے ساحل پر کشتی ڈوب گئی 15غیر قانونی تارکین غرقِ آب

طرابلس﴿ژنہوا﴾ لیبیا کی راجدھانی طرابلس سے 250کلومیٹر دورملک کے مغربی کنارے پر کشتی ڈوبنے سے اس میں سوار 15غیر قانونی تارکین وطن کی موت ہو گئی۔ لیبیا ریڈ کراس نے منگل کو یہ اطلاع دی۔ لیبیائی ریڈ کراس کے ترجمان بہا العوکاش نے خبر رساں ایجنسی ژنہوا کو بتایا’’دریائے مسراتاکے ساحل پر 25غیر قانونی تارکین وطن کی کشتی ڈوب گئی۔ حادثے کے وقت کشتی میں سوار 25سے 15غیر قانونی تارکین وطن ڈوب گئے جبکہ 10لوگوں کی جان بچا لی گئی‘‘۔ لیبیا کی بین الاقوامی آرگنائزیشن فار مٹی گیٹشن ﴿آئی او ایم ﴾ کے سربراہ عثمان بیلبیسی نے کہا کہ بچائے گئے مہاجرین کے جسم میں پانی کی بہت کمی ہے ۔ انہوں نے ٹویٹ کیا، بچائے گئے تمام تارکین وطن کے جسم میں پانی کی بہت کمی ہے اور انہیں اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے ۔ آئی او ایم لیبیا کے ڈاکٹروں اور ہنگامی ٹیم ان کی صحت کی نگرانی کر رہی ہے ۔ بحیرہ روم میں غیر قانونی اور غیر محفوظ نقل و حرکت کے مسائل کو حل کرنے کیلئے سخت اقدامات کرنے کی ضرورت ہے اور ہمیں ایسا ہوتا دکھائی نہیں دے رہا‘‘۔ قابل غور ہے کہ ہزاروں غیر قانونی تارکین وطن لیبیا سے بحیرہ روم کو پار کر کے یوروپ پہنچنے کی کوشش کرتے ہیں جس کا سبب2011میں لیبیا کے مرحوم معمر قذافی کے معزول ہونے کے بعد سے ملک میں پھیلے عدم تحفظ کا ماحول ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں