سرینگر۔ مظفرآباد تجارت معطل ،کنٹرول لائن پر فائرنگ کا شاخسانہ

سرینگر//﴿آفتاب ویب ڈیسک ﴾ لائن آف کنٹرول ﴿ایل او سی﴾ کے آر پار جموں وکشمیر اور پاکستانی زیر انتظام کشمیر کے درمیان سرینگر۔ مظفرآباد روڑ کے ذریعے ہونے والی تجارت جمعرات کو معطل کردی گئی۔ سرکاری ذرائع کے مطابق آر پار تجارت پاکستانی فوج کی طرف سے جنگ بندی معاہدے کی لگاتارخلاف ورزیوںاور اوڑی سیکٹر میںدو دنوں سے بھارتی چوکیوں کو مسلسل نشانہ بنانے کے بعد جمعرات کو معطل کی گئی۔ بتادیں کہ یہ آرپار تجارت کمان پوسٹ کے راستے سے کی جارہی ہے جوکہ اوڑی سیکٹر میں بھارت کا آخری پوسٹ ہے۔ سرکاری ذرائع سے معلوم ہوا کہ بھارت اور پاکستانی زیرانتظام کشمیر کے درمیان تمام آر پار تجاتی سرگرمیوں کو طرفین کے درمیان جاری فائرنگ کے تبادلے کے پیش نظر احتیاطی طور پر معطل کیا گیا۔انہوں نے کہا ’چونکہ کمالکوٹ میں شلنگ ہوئی جس کے نتیجے میں مال بردار ٹرکوں کی دوطرفہ آمد رفت کو معطل رکھنے کا فیصلہ لیا کیا‘۔ تاہم ذرائع نے بتایا کہ آر پار تجارتی سرگرمیوں کو حالات میں سدھار آتے ہی بحال کیا جائے گا۔ شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ میں آر پار کے تاجروں کے درمیان تجارت کا سلسلہ 2008 ئ سے جاری ہے۔ قابل ذکر ہے کہ کمان پوسٹ سے کی جارہی آرپار تجارتی سرگرمیوں کو 2008میں بحال کیا گیا جب بھارت اور پاکستان کی حکومتیں تاجروں کو چیزیں آرپار لے جانے پر راضی ہوگئیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں