سرگرم جنگجو ئوں کیخلاف آپریشن ہفت شرمال اور ٹکرو گائوں کا محاصرہ من کوٹ میں مشکوک افراد کی نقل وحرکت کے بعد جنگجو مخالف آپریشن کا آغاز

سرینگر/ یو پی آئی /پہاڑی ضلع شوپیاں میں سرگرم جنگجوئوں کے خلاف سیکورٹی فورسز نے بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا ہے ۔ معلوم ہوا ہے کہ فورسز نے ہف شرمال اور ٹکرو گائوں کو سیل کرکے فرار ہونے کے راستوں پر پہرے بٹھا دئے۔ دفاعی ذرائع نے اسکی تصدیق کرتے ہوئے کہاکہ عسکریت پسندوں کی نقل وحرکت کی اطلاع ملنے کے بعد گائوں میں جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا گیا ہے۔ ادھر راجوری کے سرحدی علاقہ مانکوٹ میں فوج نے مشتبہ افرا دکی نقل وحرکت کی اطلاع ملنے کے بعد تلاشی آپریشن شروع کیا ۔ بدھ کے روز سیکورٹی فورسز نے پہاڑی ضلع شوپیاں کے ہف شرمال گائوں کو محاصرے میں لے کر لوگوں کے چلنے پھرنے پر پابندی عائد کی۔ مقامی/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 ذرائع کے مطابق فوج ، پولیس اور سی آر پی ایف کی مشترکہ ٹیم نے گائوں میں گھر گھر تلاشی لی جس دوران مکینوں سے پوچھ تاچھ کی گئی ۔ ذرائع کے مطابق سیکورٹی فورسز کو مصدقہ اطلاع موصول ہوئی تھی کہ گائوں میں جنگجو چھپے بیٹے ہیں جس کے بعد فورسز نے جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا۔ ادھر کل رات گیارہ بجے کے قریب سیکورٹی فورسز نے شوپیاں کے ہی ایک گائوں ٹکرو کو محاصرے میں لے کر دیر رات تک گائوں کی تلاشی لی تاہم اس دوران کوئی قابلِ اعتراض شئے برآمد نہیں ہوئی۔ پولیس ذرائع نے کہا کہ فوج، سی آر پی ایف اور ایس او جی اہلکاروں نے مشترکہ کارروائی عمل میں لاتے ہوئے ہف گائوں کو محاصرے میں لیکر گھر گھر تلاشی آپریشن کا آغاز کیا ہے۔یہ آپریشن مذکورہ پولیس ذرائع کے مطابق علاقے میں جنگجوئوں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع کے بعد شروع کیا گیا۔دفاعی ذرائع کے مطابق پہاڑی ضلع شوپیاں میں عسکریت پسندوں کی نقل وحرکت کی اطلاع ملنے کے بعد ہی تلاشی آپریشن شروع کیا گیا تاہم اس دوران کسی کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی۔ دریں اثنا راجوری کے سرحدی علاقے مانکوٹ کو فورسز نے محاصرے میں لے کر بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا ہے۔ دفاعی ذر ائع کے مطابق شدید گولہ باری کے بعد فورسز نے مانکوٹ علاقے کو محاصرے میں لے کر مشکوک افراد کی تلاش شروع کی ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں