کشمیر میں سوشل میڈیا پرخبروں کی ترسیل نظر گذر رکھنے کیلئے سپیشل لیبارٹریوں کا قیام

سرینگر/ جے کے این ایس /سوشل میڈیا پر ملک مخالف مواد اور افواہ بازوں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لانے کیلئے جموںوکشمیر پولیس کی جانب سے عنقریب ہی سپیشل لیپ قائم کئے جار ہے ہیں۔ معلوم ہوا ہے کہ من گھڑت اور بے بنیاد خبروں کی ترسیل کو روکنے کیلئے سوشل میڈیا پر خصوصی نظر گزر رکھی جار ہی ہے اور اس سلسلے میں گورنر انتظامیہ نے بھی ہری جھنڈی دکھائی ہے۔ فوجی چیف لفتنٹ جنرل بپن روات کی جانب سے/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 وادی کشمیر میں سوشل میڈیا پر کڑی نظر گزر ر کھنے کے بیچ گورنر انتظامیہ نے سوشل میڈیا کے ذریعے افواہیں اور من گھڑت خبریں چلانے والوں کے خلاف کارروائی عمل میں لانے کا فیصلہ کیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ جموںوکشمیر پولیس کی جانب سے عنقریب ہی سپیشل لیپ قائم کئے جار ہے ہیں جہاں پر سوشل میڈیا سائٹوں پر خصوصی نظر گزر رکھی جائے گی جبکہ نوجوانوں کو عسکریت پسندی کی طرف مائل کرنے والوں کے خلاف کڑی کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ گورنر انتظامیہ نے فوجی چیف کے بیان کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے پولیس چیف دلباغ سنگھ کو فوری طورپر سپیشل لیب قائم کرنے کے احکامات صادر کئے ہیں جہاں پر صرف سوشل میڈیا پر نظر گزر رکھنے کے ساتھ ساتھ ایسے عناصر کی شناخت کا کام بھی ہوگا جو سوشل میڈیا پر من گھڑت خبریں پھیلا کر لوگوں کو پریشانیوںمیں مبتلا کر رہے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ افواہ بازوں کے خلاف بھی کارروائی عمل میں لانے کا امکان ہے اور اس سلسلے میں تمام تیاریوں کو آخری شکل دی جا رہی ہیں۔ ذر ائع کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا پر مختلف نیوز چینلوں اور اخبارات کے جعلی پیج بنائے گئے ہیں جس پر من گھڑت اور جعلی خبریں پھیلائی جار ہی ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ نوجوانوں کو عسکریت کی اور مائل کرنے والے سائٹوں پر قدغن لگانے کے ساتھ ساتھ ایسے افراد کی بھی شناخت کی جارہی ہیں جو نوجوانوں کو تشدد کی اور دھکیلنے کا کام کر رہے ہیں۔ معلوم ہوا ہے کہ جموںوکشمیر پولیس نے محکمہ میں ایسے آفیسروں کی لسٹ بنانے کا فیصلہ کیا ہے جنہیں سوشل میڈیا پر دسترس کے ساتھ ساتھ کیمپوٹر اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے بارے میں پوری جانکاری ہو۔ ذرائع نے بتایا کہ اس سلسلے میں سپیشل آفیسران کو تربیت دینے کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے تاکہ ایسے افراد کی فوری طورپر شناخت کرکے انہیں سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا جاسکے جو من گھڑت خبریں پھیلا کر پوری وادی میں امن و امان کو درہم برہم کرنے کا کام انجام دیتے ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں