بھارت نے سندھ طاس معاہدے کا تنازعہ حل کرنے پر آمادگی ظاہر کردی ۷۲/جنوری کو پاکستانی وفد جموں پہنچ رہا ہے

اسلام آباد /آبی تنازعہ پر پاکستان کو اس وقت سفارتی کامیابی حاصل ہوگئی جب بھارت نے پاکستان کو متنازعہ آبی منصوبوں کے معائنہ کی اجازت دے دی ہے جس کے بعد پاکستانی انڈس واٹر کمشنر رواں ماہ ہی اپنی ٹیم کے ہمراہ بھارت جائیں گے۔پاکستانی انڈس واٹر کمشنر سید مہر علی شاہ کے مطابق بھارت نے پا کستان کو دریائے چناب پر زیر تعمیر آبی منصوبوں کے /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
معائنے کے لئے گرین سگنل دے دیا ہے، امید ہے کہ معاملات طے ہوتے ہی پاکستانی انڈس واٹر کمشنر کی سربراہی میں پا کستانی وفد جنوری کے آخر میں بھارت روانہ ہو جائے گا۔ پاکستانی وفد ۷۲ جنوری سے یکم فروری تک بھارت کا دورہ کرے گا، پاکستانی ماہرین کا وفد دریائے چناب پر بننے والے منصوبے لوئر کلنائی اور پاکل دل کا معائنہ کرے گا، بھارت کی جانب سے دریائے چناب پر بنائے جانے والے دیگر منصوبوں کی معائنہ کے حوالے سے بھی مثبت اشارے ملے ہیں۔واضح رہے کہ بھارت کی طرف سے سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی پر پا کستان نے بھر پور آواز بلند کی ہے جس پر اسے کامیابی ملی ہے، بھارتی انڈس واٹر کمشنر پی کے سکسینہ کی سربراہی میں گزشتہ برس اگست میں بھارتی وفد پا کستان آیا تھا پاکستانی وفد کو گزشتہ برس اکتوبر میں بھارت متنازع آبی منصوبوں کے معائنہ کے لیے جانا تھا مگر بھارت نے بلدیاتی انتخابات کا بہانہ بنا کر منع کر دیا مگر پاکستان نے بھارت کے ساتھ مسلسل اس سلسلے میں رابطہ رکھا جس کا بھارت کی طرف سے مثبت جواب ملا۔ بھارت اور پاکستان کے درمیان سفارتی کشیدگی کے بیچ آبی تنازعات پر بھی کشیدگی پیدا ہوگئی ہے اور پاکستان نے دریائے چناب پر تعمیر کئے جانے والے تمام ڈیمز کو غیر قانونی اور آئینی و سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی سے تعبیر کرتے ہوئے بھارت سے براہ راست بات چیت کیلئے رابط قائم کرلیا ہے ۔ایسے میں پاکستان کے آبی کمشنر نے دھمکی دی ہے کہ بھارت نے اگر پاکستان کے تحفظات کودور نہیں کیا اور مذاکرات کیلئے تعاون نہیں کیا یہ کیس عالمی عدالت میں لڑا جائیگا ۔انہوںنے کہاکہ بھارت کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے آبی تنازعات انتہائی گہرے ہورہے ہیںاور بھارت ہر معاملے پر من مانی پر اتر آیا ہے کیونکہ جب جب بات چیت کے مواقعے آتے ہیںتو بھارت ایک نہیں تو دوسرا بہانے بات چیت سے راہ فرار اختیار کرجاتا ہے ۔انہوںنے کہاکہ اب بھارت کے تمام منصوبوںپر شک کی نگاہ پڑ گئی ہے اور انہوںنے کہاکہ حکومت اس سلسلے میں تمام دریاوںپر تعمیر کئے گئے ڈیموں کی نئی سرے سے جانچ کریگا اور اایسے میں بھارت سے کہا گیاہے کہ وہ تمام ڈیموں کا ڈاٹا فراہم کرے آبی کمشنر کا کہنا تھا کہ ہم نے اس سلسلے میں بھارتی حکومت کو ایک خط بھی روانہ کر دیا ہے جس میںانہیں کہا گیا ہے کہ پاکستان اپنے اطمینان کیلئے ان ڈیموں کی تعمیر کے ڈیزائن کو چیک کرنے کیلئے ایک ٹیم بھی بھیج رہا ہے جس پر بھارت نے ابھی تک کوئی رد عمل ظاہر نہیں کیا ہے.

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں