کشمیر میں علیحدگی پسندی کا صفایا کیاجائیگا پاکستان کو اب سفید جھنڈا نہیں دکھایاجائیگا: وزیرداخلہ

نئی دہلی /مرکزی وزیر داخلہ نے کانگریس سرکار پر برستے ہوئے کہا ہے کہ کانگریس نے نکسلواد اور علیحدگی پسندوں کے خلاف نرم رویہ اختیار کیا ہے جس کی وجہ سے علیحدگی پسندی اور نکسلواد کا رجحان بڑھ گیا ہے ۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ 3 سے 4 سال کے اندر ہندوستان سے نکسل واد ، علیحدگی پسندی اور انتہاپسندی کا صفایا کر دیا جائیگا۔ کانگریس کی پہلے کی حکومتوں نے انتہا پسندی اور نکسل واد کے خلاف مؤثر کارروائی نہیں کی۔کانگریس صدر راہل گاندھی کا نام لئے بغیر راج ناتھ سنگھ نے کہا، ’’ کانگریس کے لیڈر کہتے ہیں ہماری حکومت آئیگی، تو کسانوں کے قرض معاف کئے جائینگے۔ ہندوستان میں 55 سال تک ان کی حکومت رہی ہے اور کتنی مرتبہ قرض مرکزی وزیر داخلہ نے کانگریس سرکار پر برستے ہوئے کہا ہے کہ کانگریس نے نکسواد اور علیحدگی پسندوں کے خلاف نرم رویہ اختیار کیا ہے جس کی وجہ سے علیحدگی پسندی اور نکسلواد کا رجحان بڑھ گیا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ کانگریس کے نرم رویہ کی وجہ سے ہی مغربی ہندوستان نکسلواد/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 اور کشمیر میں علیٰحدگی پسندوں کو طول ملا ہے جس کا خمیازہ آج دیش اُٹھارہا ہے تاہم اگر مرکز میں بھاجپا پھر سرکار بنانے میں کامیاب ہوگی تو کشمیر سے علٰحدگی پسندی کا رجحان اور انتہا پسندی کے خاتمہ کے ساتھ ساتھ مغربی ہندوستان میں نکسلواد کا مکمل صفایا تین سے چار برسوںمیں کیا جائے گا اور ملک میں ہمیشہ کیلئے اس ناسور سے چھٹکارا مل جائے گا۔ آئندہ لوک سبھا انتخابات کو لے کر بی جے پی نے پوری طاقت لگا دی ہے۔ اسی طرح میں ہفتہ کے روز بہار کے سمستی پور ضلع میں منعقد ایک تقریب میں شرکت کرنے پہنچے مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے لوگوں کو خطاب کیا۔ اس موقع پر انہوں نے پاکستان کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ اب سفید جھنڈا نہیں دکھایا جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ہمارا پڑوسی ملک ہے اور پہلی گولی ہماری طرف سے نہیں چلیگی۔ پاکستان کی جانب سے جب ایک گولی چلیگی تو پھر ہندوستان کی طرف سے گولی کی گنتی نہیں کی جائیگی۔وزیر داخلہ نے کہا کہ 3 سے 4 سال کے اندر ہندوستان سے نکسل واد کا صفایا کر دیا جائیگا۔ پہلے کی حکومتوں نے انتہا پسندی اور نکسل واد کے خلاف مؤثر کارروائی نہیں کی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں