بھارت میں شہروں کے نام بدلنے اور رام مندر کی تعمیر ترجیحات میں شامل دوسری جانب پاکستان میں گورونانک کے نام پر یونیورسٹی قائم کی جارہی ہے: محبوبہ مفتی

سرینگر/یو این آئی /پی ڈی پی صدر و سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کہا کہ جہاں ایک طرف ہندوستان میں موجودہ حکومت کی اہم ترین ترجیح شہروں کے نام بدلنا اور رام مندر تعمیر کرنا ہے، وہیں دوسری طرف پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان صوبہ پنچاب کے ننکانہ صاحب میں ایک عظیم الشان بابا گرونانک یونیورسٹی قائم کرنے اور بابا گرونانک ریزورٹ اینڈ وائلڈ لائف پارک بنانے میں سرگرم عمل ہیں۔ محترمہ مفتی نے اتوار کو ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ’وقت کیسے بدل جاتا ہے۔ جہاں ایک طرف مرکزی حکومت ﴿حکومت ہندوستان﴾ کی اہم ترین ترجیح ظاہری طور پر تاریخی شہروں کے نام بدلنا اور رام مندر کی تعمیر ہے، وہیںدوسری طرح پاکستان کے وزیر اعظم نے بلوکی ﴿ننکانہ صاحب﴾ فارسٹ ریزرو کا نام گرو نانک جی کے نام سے منسوب کرنے اور ان کے نام پر یونیورسٹی قائم کرنے کے اقدامات شروع کردیے ہیں‘۔ بتادیں کہ پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے ہفتہ کے روز ننکانہ صاحب کے بلوکی میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ’بلوکی ریزرو کو ہم نے ریزورٹ اینڈ وائلڈ لائف پارک بنایا ہے۔ میں کہوں گا کہ ہم اس کو بابا گرونانک کے نام پر بنائیں گے۔ انشائ اللہ ہم یہاں ایک زبردست بابا گرونانک یونیورسٹی بنائیں گے۔ مجھے اچھا لگتا ہے کہ جب لوگ اسکول، یونیورسٹیاں اور کالجز مانگتے ہیں۔ یہ ایک زندہ معاشرے کی نشانی ہے‘۔/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 عمران خان نے کہا کہ سکھ مذہب کے بانی بابا گرونانک کے 550 ویں جنم دن کے موقع پر ان کی جنم بھومی ’کرتارپور‘ میں ایک بڑے پیمانے کی تقریب منعقد کی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا ’میں پاکستان میں اپنی سبھی اقلیتوں کو کہنا چاہتا ہوں کہ انشائ اللہ ہم وہ پاکستان بنائیں گے جو سب کے لئے ہوگا۔ میں پاکستان اور پاکستان سے باہر رہنے والی سکھ برادری کو کہنا چاہتا ہوں کہ آپ کے لئے ننکانہ صاحب اور کرتارپور کتنی اہمیت رکھتا ہے۔ ہم آپ کی پوری طرح سے مدد کریں گے۔ بابا گرو نانک کی 550 ویں جنم دن کی تقریب آنے والی ہے۔ انشائ اللہ اس موقع پر کرتار میں بڑے پیمانے کی تقریب منعقد ہوگی‘۔ یو این آئی

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں