دھونی کا ورلڈ کپ ٹیم میں ہونا اہم: یوراج

ممبئی/یو این آئی/ سال 2011کے ورلڈ کپ میں مہندر سنگھ دھونی کی قیادت میں ہندستان کی ورلڈ کپ کی خطابی جیت میں مین آف دی ٹورنامنٹ رہے بائیں ہاتھ کے بلے باز یوراج سنگھ نے کہا ہے کہ چند ماہ میں انگلینڈ میں ہونے والے ورلڈ کپ میں دھونی کا ہندستانی ٹیم میں ہونا انتہائی ضروری ہے ۔آئی سی سی کی سرکاری ویب سائٹ کے مطابق یوراج نے ممبئی میں کہا کہ دھونی ہندستان کے عظیم کپتان ہیں اور ان کا تجربہ اور کھیل کے تئیں ان کا دماغ انگلینڈ میں 30 مئی سے ہونے والے ورلڈ کپ میں ٹیم کے بہت کام آئے گا۔غور طلب ہے کہ دھونی کے فارم کو لے کر گزشتہ کئی مہینوں سے کرکٹ کی دنیا میں مختلف قسم کے قیاس لگائے جاتے رہے ہیں ایسے میں ہندوستانی کرکٹ کے کئی بڑے کھلاڑی دھونی کا ساتھ دیتے نظر آ رہے ہیں۔ پہلے سنیل گواسکر اور اب یوراج نے کھل کر دھونی کی حمایت کی ہے ۔دھونی نے گزشتہ دنوں آسٹریلیا کے خلاف ون ڈے سیریز میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا اور انہوں نے تین ون ڈے میچوں میں جاری تین نصف سنچری بنا کر مین آف دی سیریز کا خطاب اپنے نام کیا تھا۔ اس کے علاوہ نیوزی لینڈ کے ساتھ ہوئی محدود اوورز کی سیریز میں بھی دھونی کی کارکردگی خاصی تسلی بخش رہی۔سال 2011 ورلڈ کپ ٹیم میں مین آف دی ٹورنامنٹ رہنے والے یوراج نے کہاکہ ایک وکٹ کیپر کی حیثیت سے وہ اس کھیل کی نگرانی بہترین طریقے سے کرتے آئے ہیں، انہوں نے اس کام کو کئی سالوں سے پورا کیا ہے ۔ وہ ایک عظیم کپتان تھے اور وہ ہمیشہ ہی نوجوان کھلاڑیوں اور کپتان وراٹ کوہلی کی رہنمائی کرتے آئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ مجھے لگتا ہے کہ فیصلہ کرنے میں ان کی موجودگی بہت اہم ہے ۔ ان کی آسٹریلیا میں انتہائی شاندار کارکردگی رہی تھی۔ یہ دیکھنا خوشگوار تھا کہ وہ گیند بازوں کو بہترین طریقے سے کھیل رہے تھے ۔ میری نیک خواہشات ان کے ساتھ ہیں۔ہندستان کے طوفانی بلے باز یوراج نے نوجوان کھلاڑی شبھمن گل کی بھی تعریف کرتے ہوئے کہاکہ میں نے انہیں ہندوستان کے لئے کھیلتے ہوئے دیکھ کر کافی حوصلہ افزائی کی تھی۔ یہ دیکھنا حیرت انگیز ہے کہ انہوں نے اپنے کھیل میں بہت سدھار کیا ہے ۔ وہ ہندستان اے کے دورے سے واپس آئے اور گھریلو کرکٹ میں کافی رنز بنائے ۔غور طلب ہے کہ یوراج کو 2015 ورلڈ کپ ٹیم میں شامل نہیں کیا گیا تھا۔ انہوں نے ویسٹ انڈیز کے خلاف جون 2017 میں اپنا آخری ون ڈے میچ کھیلا تھا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں