سکاسٹ کشمیر میں دو روزہ قومی سمینار اِختتام پذیر

سرینگر/گورنر کے مشیر کے سکند ن نے ماحولیاتی تبدیلی سے پیدا شدہ اثرات سے نمٹنے اور ماحولیات کو تحفظ دینے کے لئے ایک ماحول دوست ترقیاتی ماڈل وجود میں لانے پر زور دیا۔مشیر موصوف آج یہاں سکاسٹ کشمیر میں ماحولیاتی تبدیلی سے متعلق روزہ قومی سمینار کی اختتامی تقریب سے خطاب کررہے تھے جس کا انعقاد سکاسٹ کے ماحولیاتی سائنسز ڈویژن نے کیا تھا۔سمینار میں ملک کی مختلف یونیورسٹیوں سے تعلق رکھنے والے لگ بھگ 150 مندوبین نے شرکت کی اور انہوں نے زراعت ، باغبانی ، آبی وسائل ، قدرتی وسائل اور ہمالیائی حیاتیاتی تنوع پر ماحولیاتی تبدیلی سے پیدا شدہ اثرات پر سیر حاصل تبادلہ خیال کیا۔کے سکند ن جو اس موقعہ پر مہمان خصوصی کی حیثیت سے موجو د تھے  نے سائنسدانوں اور دیگر متعلقین پر زور دیا کہ وہ ماحولیات دوست حکمت عملی اختیار کریں تاکہ بدلتے آب و ہوا کے مضر اثرات کو کم کیا  ......جاسکے۔ انہوں نے کہاکہ ماہرین سکالروں اور سول سوسائٹی کے مابین سمیناروں اور دیگر پروگراموں کا انعقاد کیا جانا چاہیے تاکہ متعلقین میں بیداری کی جاسکے۔بعد میںمشیر نے یونیورسٹی میں قائم کئے گئے ہائی ڈنسٹی میوہ باغ کا بھی دورہ کیا ۔ انہوں نے اس موقعہ پر بہترین کارکردگی دکھانے والے سائنسدانوں میں اسناد تقسیم کیں۔وائس چانسلر سکاسٹ کشمیر پروفیسر نذیر احمد نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ماحولیاتی تبدیلی سے جڑے مختلف پہلوئوں کو اجاگر کیا اور کہا کہ یونیورسٹی اس مسئلے سے نمٹنے کے لئے خاطر خواہ اقدامات کررہی ہے۔اس سے پہلے ڈین ہارٹیکلچر پروفیسر ایف اے زکی نے سمینار کی سفارشات پر تفصیل سے روشنی ڈالی ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں