کشمےر ےونےورسٹی مےں کھےلوں کو جدےد سہولےات سے لےس کےا جائے

سرےنگر/ اےم اےم مےر کے مطابق کشمےر ےونےورسٹی جو برسوں سے اپنا کام کاج چلا رہی ہے اور تعلےم کا معےار بہتر بنانے کے سلسلے مےں کروڈوں روپےہ مختلف تعلےمی اور تعمےری کاموں مےں صرف کر رہی ہے لےکن فزےکل اےجوکےشن سپورٹس اور کھےلوں کے بنےادی ڈھانچے کو از سر نو تعمےر کرنے مےں سر اسر نا کام رہی ہے۔ جبکہ بےرون ےونےورسٹےوں مےں کھےلوں کا بنےادی ڈھانچہ ابتدائ سے ہی ترجےحی بنےادوں پر تعمےر ہو چکا ہے لےکن بد قسمتی کا مقام ےہ ہے کہ کشمےر ےونےورسٹی مےں سنتھٹےک اتھےلٹک ٹرےک ، سےومنگ پول ، جےمنازےم ، ہاکی ٹرف، سائےکلنگ ٹرےک ، باکسنگ رنگ، اسےکٹنگ رنگ، انڈور، بےڈ منٹن ہال، باسکٹ بال کورٹ کی عدم موجود گی ہمارے ہزاروں کھلاڑےوں اور اتھےلٹس کےلئے بد نصےبی نہےں تو اور کےا ہے۔ 1950سے لےکر آج تک ہر اےک وائس چانسلر نے کھےلوں کے بنےادی ڈھانچے کو تعمےر کرنے مےں اپنا تعمےری رول ادا کرنے مےںغےر ذمہ داری سے کام لےا ہے۔ اس روداد کہانی کا دوسرا روپ ےہ ہے کہ تقرےبا7سالوں سے شعبہ فزےکل اےجوکےشن و سپورٹس بغےر ٹےکنکل سر براہ کام کررہا ہے۔ بد قسمتی سے ڈائرےکٹر فزےکل اےجوکےشن کے عہدے پر کسی ڈےپاٹمنٹ کا پروفےسر کا م کر رہا ہے۔ جو ےو جی سی قوانےن کے خلاف ہے۔  جبکہ وائس چانسلروادی کے ڈگری کالجوں سے اعلیٰ ٹےکنکل تعلےم ےافتہ ڈائرےکٹر فزےکل اےجوکےشن کو اس عہدے پر کام کرنے کےلئے۔ منتخب کر سکتے ہےں۔ جو ہر وقت ےہاں پر دستےاب ہےں۔ ےہی وجہ ہے کہ کئی سالوں سے اس شعبے کی کار کر دگی متاثر رہی ہے اور کئی ٹےمےں نارتھ زون انٹر ےونےورسٹی چمپےن شپ مےں شرکت کرنے سے غےر حاضر رہی جس سے ےہاں کے ہزاروں کھلاڑےوں کا کےرئےر تارےک بن چکا ہے۔ حقےقت ےہ ہے کہ 30ڈگری کالجوں کے پرنسپل صاحباں ہر سال لاکھوں کی تعداد مےں سپورٹس فےس ادا ئےگی کرنے مےں کوئی کسر باقی نہےں رکھتے۔ حےرت کا مقام ےہ ہے کہ کھےلوں سے انعقاد سے پہلے پرنسپل صاحباں کو اپنے اعتماد مےں نہےں لےا جا تا ہے۔ بحیثےت سابقہ ڈائرےکٹر فزےکل اےجوکےشن و فٹ بال کوچ و امر سنگھ کالج مےں چانسلر اور وائس چانسلر اور پرنسپل صاحباں سے ہزاروں کھلاڑےوں کی طرف سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ ترجےحی بنےاد پر ےونےورسٹی مےں کھےلوں کے بنےادی ڈھانچے کو از سر نو تعمےر کرنے مےں مکمل منصوبہ بندی سے کام لےں۔ تاکہ گرےڈ Aےونےورسٹی پر سوالےہ کھڑا نہ ہو جائے۔ کےونکہ ہمےں اپنے ہزاروں کھلاڑےوں کے روشن مستقبل اور اُن کی حوصلہ افزائی کرنے مےں اپنے آپ کو ہر وقت وقف کرنا چاہئے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں