پاکستانی کمپنی سمیت 12 غیر ملکی اداروںاور افراد پر امریکی پابندی عائد

اسلام آباد / 14مئی/ امریکہ کے محکمہ تجارت نے ایک پاکستانی کمپنی سمیت 12 غیر ملکی اداروں اور شخصیات کو امریکہ کی قومی سلامتی کے لیے باعثِ تشویش قرار دیتے ہوئے ان کے نام ان افراد اور اداروں کی فہرست میں شامل کرنے کا اعلان کیا ہے جنہیں بعض حساس مصنوعات کی تجارت کے لیے لائسنس درکار ہوتا ہے۔ محکمہ تجارت کی طرف سے پیر کو جاری ایک بیان کے مطابق اس اقدام کا مقصد ’’حساس نوعیت کی ٹیکنالوجی کو ان ہاتھوں میں جانے سے روکنا ہے جو امریکہ کی قومی سلامتی اور امریکی شہریوں کے لیے خطرہ بن سکتی ہے۔‘‘ امریکی حکام کا کہنا ہے کہ انہوں نے یہ پابندی ان کمپنیوں کی جانب سے حساس نوعیت کی امریکی ٹیکنالوجی اور مصنوعات کی خریداری کی بنیاد پر عائد کی ہے جو ایران کے جوہری پروگرام یا چین کی فوجی سرگرمیوں میں استعمال ہوسکتی تھیں۔ محکمہ تجارت کے بیان کے مطابق جن 12 کمپنیوں کو امریکہ کی قومی سلامتی کے لیے خطرہ قرار دیا گیا ہے ان میں سے چار ایسی ہیں جن کا تعلق چین اور ہانگ کانگ سے ہے جب کہ دو مزید چینی، ایک پاکستانی اور متحدہ عرب امارات کے پانچ افراد بھی ان میں شامل ہیں۔ بیان کے مطابق یہ کمپنیاں اور افراد اگر برآمدات سے متعلق انتظامی ضابطہ کار کی خلاف ورزی کریں گے تو انھیں جرمانے کے ساتھ ساتھ پابندیوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں