کیا راہل منی شنکر ایر کے بیان سے متفق ہیں؟راج ناتھ

نئی دہلی’ 14مئی âیو این آئیá بھارتیہ جنتا پارٹی کے سابق صدر اور مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے کانگریس کے سینئر رہنما منی شنکر ایر کے وزیر اعظم نریندر مودی پر دوبارہ کئے گئے نازیبا تبصرہ پر کانگریس صدر راہل گاندھی سے سوال کیا کہ کیا وہ اس مرتبہ مسٹر ایر کے خیالات سے متفق ہیں۔ مسٹر سنگھ نے یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں ایک پریس کانفرنس میں مسٹر ایر کے بیان کے بارے میں پوچھے جانے پر کہا کہ مسٹر ایر نے گجرات اسمبلی الیکشن کے دوران بھی وزیر اعظم مودی کو نیچ کہا تھا جس کے بعد مسٹر ایر کو پارٹی سے معطل کردیا گیا تھا۔ بعد میں ان کی کانگریس میں بحالی ہوگئی تھی۔ اب پھر مسٹر ایر نے اسی طرح کا بیان دہرایا ہے ۔انہوں نے کہا کہ کانگریس بتائے کہ اس کا اب کیا خیال ہے ۔ وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ کیا مسٹر گاندھی اس مرتبہ مسٹر ایر کے خیالات سے متفق ہیں؟ مغربی بنگال میں سیاسی تشدد پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے مسٹر سنگھ نے کہا کہ صحت مند جمہوریت میں سیاسی تشدد کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے ۔ کوئی خواہ کسی بھی جماعت سے تعلق رکھتا ہو سیاسی تشدد کو روکنا ہر کسی کی ذمہ داری ہے ۔ ریاست میں قانون و انتظام ریاستی حکومت کی پہلی ذمہ داری ہوتی ہے اور اسی لئے مغربی بنگال میں جو کچھ بھی ہورہا ہے اسے روکنے کی ذمہ داری وزیر اعلی ممتابنرجی کی ہے ۔ انہیں اس ذمہ داری کو قبول کرنا چاہئے ۔ محترمہ بنرجی نے مرکزی سیکورٹی فورسیز کی وردی میں آر ایس ایس اور بی جے پی کے کارکنوں کو الیکشن میں تعینات کئے جانے کے الزامات کے بارے میں کہا کہ مرکزی سیکورٹی فورسیز الیکشن کے وقت الیکشن کمیشن کی مانگ پر انہیں دی جاتی ہے اور وہ کمیشن کے تحت رہتے ہیں ان کی تعیناتی پوری طرح سے کمیشن کے ہاتھوں میں ہوتی ہے ۔ الیکشن ڈیوٹی پر گئے مرکزی فورسیز مرکزی حکومت اور وزارت داخلہ کے ہاتھ میں نہیں ہوتی ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں