لوک سبھا انتخابات کی ووٹ شماری آج ہوگی، بڑی تعداد میں سکیورٹی اہلکار تعینات

نئی دہلی،22مئیâیو این آئی)17ویں لوک سبھا کی 542 سیٹوں اور چارریاستوں کے اسمبلی انتخابات کے بعد جمعرات کو ہونے والی ووٹ شماری کی تمام تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں۔ ووٹوں کی گنتی پہلے کی طرح ہی ہوگی اور گنتی پوری ہونے کے بعد ہی وی وی پی اے ٹی کی پرچیوں کو ایم وی ایم سے ملایا جائے گا۔ ووٹوں کی گنتی شروع ہونے کے وقت وی وی پی اے ٹی کی پرچیوں کا ای وی ایم سے توثیق کے لیے 22اپوزیشن پارٹیوں کے مطالبے کو ٹھکرانے کے بعد کمیشن نے پہلے کی طرح ہی ووٹوں کی گنتی کرانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس بارے میں تمام ضروری ہدایات دی گئی ہیں۔ ووٹوں کی گنتی جمعرات کی صبح آٹھ بجے سے ہوگی۔ پورے ملک میں بنائے گئے ووٹوں کی گنتی کے مراکز پر بڑی تعداد میں سکیورٹی اہلکار تعینات کردیے گئے ہیں اور میڈیا کے لیے بھی خبروں کی حصولیابی کے لیے ضروری سہولیات مہیا کرائی گئی ہیں۔ ایمرجنسی کی صورتحال سے نمٹنے کے لیے بھی ہر طرح کا انتظام کیا گیا ہے ۔ ووٹوں کی گنتی کے لیے الیکشن کمیشن کے ذریعہ پہلے سے طے شدہ ضابطوں پر عمل درآمد کرایا جائے گا ۔اس دوران کسی طرح کی خامی ،گڑبڑی یا غلطی کو فوری طور پر دور کرنے کا بھی انتظام کیا گیا ہے تاکہ ووٹ شماری بہتر طور پر اور بغیر کسی رکاوٹ کے جاری رہے ۔ شدید گرمی کے پیش نظر ووٹ شماری میں حصہ لینے والے اہلکاروں اور سیاسی پارٹیوں کے ایجنٹوں کے لیے بھی مخصوص انتظامات کیے گئے ہیں تاکہ انھیں کسی بھی طرح کی بد انتظامی سے جوجھنا نہ پڑے ۔لوک سبھا الیکشن کے ساتھ ہی چار ریاستوں آندھرا پردیش، اڈیشہ، اروناچل پردیش اور سکم کی اسمبلی سیٹوں کے لیے 11 اپریل سے 19 مئی کے درمیان الیکشن کرائے گئے تھے ۔وی وی پی اے ٹی پرچی سے ووٹوں کی توثیق کے لیے کوئی پانچ ووٹنگ سینٹر کو فوری طور پر منتخب کر لیا جائے گا۔ وی وی پی اے ٹی کی توثیقی عمل میں چار سے پانچ گھنٹے کا وقت لگ سکتا ہے ۔ انتخابی نتائج کمیشن کی ویب سائٹ اور ووٹر ہیلپ لائن ایپ پر مہیاہوں گے ۔ کمیشن نے اس مرتبہ لوک سبھا الیکشن کے لیے 55 لاکھ ای وی ایم کا استعمال کیا ہے ۔تقریباً10 لاکھ ووٹنگ سینٹر اور 91 کروڑ رجسٹرڈ ووٹروں کے ساتھ دنیا کے سب سے بڑے جمہوری ملک کی 17ویں لوک سبھا کا الیکشن منعقد ہوا ہے ۔ اس بار کل ووٹروں کی تعداد 2014 کے مقابلے 7.5 کروڑ زیادہ تھی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں