عالمی کپ 2019میرے لئے سب سے چیلنجنگ ہوگا:وراٹ، کوئی بھی ٹیم کسی بھی ٹیم کو الٹ پھیر کا شکار بنا سکتی ہے

ممبئی، 21 مئی âیو این آئیá ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان وراٹ کوہلی نے کہا ہے کہ عالمی کپ ۔2019 ان کے کیریئر کا سب سے چیلنجنگ آئی سی سی ٹورنامنٹ ہوگا۔وراٹ کی قیادت میں 15 رکنی ٹیم 30 مئی سے انگلینڈ اینڈ ویلز میں عالمی کپ کے خطاب کے دعویدار کے طور پر اترے گی۔ آئی سی سی ٹورنامنٹ کے لیے روانہ ہونے سے قبل ہندوستانی ٹیم کے قومی کوچ روی شاستری کے ساتھ کپتان وراٹ نے منگل کو یہاں پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔وراٹ کے کیریئر کا یہ تیسرا ورلڈ کپ ہے لیکن بطور کپتان یہ ان کا پہلا عالمی ٹورنامنٹ ہے ۔ کپتان نے کہاکہ ‘‘میرے لئے یہ اب تک کا سب سے چیلنجنگ عالمی کپ ہے جہاں کوئی بھی ٹیم کسی بھی ٹیم کو الٹ پھیر کا شکار بنا سکتی ہے ۔ ہر ٹیم کو حالات کے مطابق خود کو جلد ہی ڈھالنا ہوگا۔ ہم ورلڈ کپ میں ہر طرح کے اسکور والے میچ کے بارے میں سوچ سکتے ہیں’’َ۔ہندوستانی ٹیم کے امکانات کے بارے میں انہوں نے کہاکہ ‘‘اگر ہم پوری طاقت کے ساتھ کھیلیں، تبھی ہم کچھ سوچ سکتے ہیں۔ انگلینڈ کی پچیں فلیٹ ہیں لیکن انگلینڈ میں موسمی حالات بھی معنی رکھتے ہیں۔ اگر آپ لندن جائیں تو آپ کو اپنی تیاریوں میں لچک لانے کی ضرورت ہوگی۔ ہماری ٹیم تجربہ کار ہے اور سب ایک دوسرے کے ساتھ اچھا تال میل رکھتے ہیں’’۔ہندوستانی ٹیم میں کئی تجربہ کار اور نوجوان کھلاڑیوں کو اتارا گیا ہے لیکن بلے بازی آرڈر میں ایک بار پھر دنیا کے اسٹار بلے باز وراٹ پر دارومدار رہے گا۔ بلے باز نے کہاکہ ‘‘ہمارے لیے کافی چیلنجنگ ہے لیکن اچھی بات یہ ہے کہ ہمارے کھلاڑیوں کے پاس پھر سے متحد ہونے اور تیاریاں کرنے کا موقع رہے گا۔ فٹ بال کے کھیل میں کھلاڑیوں کے پاس تین سے چار ماہ خود کو بہتر بنانے کیلئے ہوتے ہیں’’۔قومی کوچ شاستری نے بھی کہا کہ ٹیم کو ورلڈ کپ میں اپنی فارم قائم رکھنے پر توجہ مرکوز رکھنی ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ ‘‘ہم کسی ایک ٹیم کے بارے میں نہیں سوچ سکتے ہیں۔ ہمیں پورے ٹورنامنٹ میں اپنی فارم برقرار رکھنی ہوگی۔ ہمیں پوری صلاحیت کے ساتھ عالمی کپ کے لیے تیاری کرنی ہوگی اور ہم فی الحال کسی ایک حریف ٹیم کے بارے میں نہیں سوچ رہے ہیں’’َ۔ہندوستان کا گیند بازی کا شعبہ بھی کافی مضبوط مانا جا رہا ہے جس میں جسپریت بمراھ، محمد سمیع اور بھونیشور کمار شامل ہیں۔ اگرچہ وراٹ اورشاستری پر منحصر رہے گا کہ وہ عالمی کپ میں ایک اضافی گیند باز کے ساتھ اتریں گے یا نہیں۔ ٹیم کے پاس اسپنروں کے طور پر یجویندر چہل اور کلدیپ یادو موجود ہیں۔ہندوستانی ٹیم عالمی کپ میں اپنی مہم کا آغاز 5 جون کو جنوبی افریقہ کے خلاف مقابلے سے کرے گی اور اس سے پہلے 25 مئی کو نیوزی لینڈ کے خلاف اور 28 مئی کو بنگلہ دیش کے خلاف پریکٹس میچ کھیلے گي ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں