کانگریس کے سامنے لوک سبھا میں لیڈر کے انتخاب کا مسئلہ

نئی دہلی، 27 مئی âیو این آئیá لوک سبھا انتخابات میں ملک ارجن کھڑگے سمیت کانگریس کے کئی بڑے رہنماؤں کی شکست کی وجہ اس کے سامنے ایوان میں لیڈر کے انتخاب کا بحران پیدا ہو گیا ہے ۔کانگریس پارلیمانی پارٹی کی لیڈر سونیا گاندھی اور پارٹی صدر راہل گاندھی اس بار بھی ایوان میں ہوں گے لیکن ان میں سے کوئی ایوان کے لیڈر کا عہدہ سنبھالے گا یا نہیں یہ ابھی واضح نہیں ہے۔ پچھلی بار بھی دونوں ایوان کے رکن تھے لیکن لیڈر کا عہدہ مسٹر کھڑگے کو سونپا گیا تھا۔اس بار قیاس آرائیاں کی جا رہی ہیں کہ ششی تھرور، ادھیر رنجن چودھری اور منیش تیواری میں سے کسی کو بھی لیڈر کا عہدہ دیا جا سکتا ہے ۔ منیش تیواری پچھلی بار ایوان کے رکن نہیں تھے ۔ مسٹر چودھری 1999 سے لوک سبھا کے رکن ہیں اور ان رہنماؤں میں وہی سب سے زیادہ تجربہ کار ہیں۔پارٹی کے سینئر مسٹر کھڑگے کے علاوہ، ویرپا موئلی، کے ایچ منی اپّا اور کے وی تھامس بھی اس بار لوک سبھا نہیں پہنچ پائے ہیں۔ سولہویں لوک سبھا میں مسٹر ایم آئی شانواس پارٹی کے ایک اور سینئر لیڈر لوک سبھا میں تھے لیکن اس بار ان کی وایناڈ سیٹ سے کانگریس صدر راہل گاندھی امیدوار تھے اس لئے انہوں نے الیکشن نہیں لڑا تھا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں