پاکستانی رینجرس کا مقابلہ کرنے کےلئے بھارتی فوج کو سینپر رائفلیں فراہم کی گئیں

سرینگر/ اے پی آئی /حد متارکہ پرپاکستانی رینجرس کا مقابلہ کرنے کیلئے فوج و اعلیٰ میعار کی سنیئپر رائفل فراہم کی گئی ،وزیردفاع نے سنیئپررائفل کو دراندازی اور جنگبندی معاہدے کیخلاف ورزی کیلئے معاون قراردیا ۔ حد متارکہ اور بین الاقوامی لائن آف کنٹرول پرپاکستانی رینجرس کی جانب سے پچھلے کئی برسوںکے دوران سنیئپررائفل استعمال کرنے کے دوران کئی فوجی اہلکاروں کی جانیں ضائع  /جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
ہونے کے بعد مرکزی حکومت نے وزارت دفاع کو اعلیٰ میعار کی سنیئپررائفل خریدنے کی اجازت دے دی ،مرکزی حکومت کی جا نب سے اجازت ملنے کے بعد گزشتہ دنوں وزارت دفاع نے فوج اور نیم فوجی دستوں کی کئی یونٹوںکوایم 95.50TGTوکٹوریہ 338لمپوا میگنا نامی سنیئپررائفل فراہم کی ہے ۔دفاعی ذرائع کے مطابق سنیئپررائفل 1.5کلو میٹر تک مار کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے اوراس کے استعمال سے حدمتارکہ وار بین الاقوامی کنٹرول لائن پرکئی طرح کے مشکلوں سے نمٹنے میں سہولیت ملے گی ۔وزارت دفاع نے سنیئپررائفل کو اعلیٰ میعار کی رائفل قراردیتے ہوئے کہا کہ اس کے استعمال سے پاکستانی رینجرس کا بھر پور مقابلہ کیاجاسکے گا ۔وزارت دفاع کے مطابق سرحدوں پرفوج اور نیم فوجی دستوں کواعلیٰ میعار کی خود کار سنیئپررائفل رواں برس کے اکتوبر تک فراہم کی جائے گی جبکہ کئی نئی رائفلیں بھی فوج کوسونپی جارہی ہیں ۔ادھروزیرداخلہ امیت شاہ نے 338TGTسنیئپر رائفل فوج اور نیم فوجی یونٹوںکوفراہم کرنے پراطمنان کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس سے حدمتارکہ بین الاقوامی کنٹرول لائن اور دوسری سرحدوں پرفوج نیم فوجی دستوں کے جوانوںکوحالات  سے نمٹنے میں مد ملے گی ۔وزیرداخلہ نے کہا کہ جموں و کشمیر شمال مشرق کی ریاستوں میں دراندازی اور جنگبندی معاہدے کی خلاف ورزی سے نمٹنے کیلئے فوج اور نیم فوجی دستوں کو جدید الات کے ساتھ ساتھ مذید ہتھیار فراہم کئے جارہے ہیں تاکہ ملک کی سرحدوں کو اچھی طرح سے مضبوط و مستحکم بنایا جاسکے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں