مسئلہ کشمیر پر وزیر اعظم کا بیان گیلانی نے حقیقت سے منافی قرار دیا

سرینگرññچیرمین حریت âگáسید علی گیلانی نے بھارت کے وزیر اعظم کی طرف سے مسئلہ کشمیر پر دئے گئے حالیہ بیان کو تاریخی اور زمینی حقائق کے سراسر منافی قرار دیتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر کے عوام پچھلے 71برسوں سے اپنے پیدائشی حق ’’حقِ خودارادیت‘‘ کے لیے مثالی قربانیوں سے عبارت رواں تحریک مزاحمت میں مصروف عمل ہے۔ حریت راہنما نے مسٹر نریندر مودی کے بیان پر اپنا شدید ردّعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر بھارت کا کبھی حصہ تھا اور نہ آئندہ بننے اپنی لہو رنگ تحریک آزادی کو بھارت کی فوجی، سیاسی، مذہبی اور تہذیبی جارحیت سے مرعوب ہوکر سرینڈر کرنے کے بارے میں سوچ بھی سکتی ہے۔ انہوں نے اپنے اس دیرینہ موقف کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم بھارت کے کسی بھی حصے کو کاٹ کر مانگنے کے روادار نہیں ہیں، البتہ جموں کشمیر کی ریاست پر بھارت کے جبری اور ناجائز فوجی قبضہ کے خلاف برسرِ جدوجہد ہیں۔ حریت راہنما نے بھارتی وزیہر اعظم کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ وہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے فوجی زبان میں بات کرنے کے بجائے تاریخی حقائق کو تسلیم کرتے ہوئے اپنے عوام کو کسی ابہام میں رکھنے کی ناکام کوششوں سے اجتناب کریں۔ حریت چیرمین نے مسئلہ کشمیر کو ایک متنازعہ اور زندہ حقیقت ہونے کی وکالت کرتے ہوئے کہا کہ اقوامِ متحدہ کے میز پر اس ذمہ دار فورم کی طرف سے ڈیڑھ درجن کے قریب قراردادیں بھارتی ویزر اعظم کے دعوے کو مسترد کرنے کے لیے ایک بہت بڑا ثبوت موجود ہے۔ اس کے علاوہ ریاست جموں کشمیر کے زمینی حقائق بھارت کے فوجی قبضے کے خلاف ایک منہ بولتا ثبوت ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں