انجمن شرعی کے اہتمام سے بین الاقوامی امام خمینیؒ کانفرنس کا انعقاد سرکردہ علمائ دانشوران اور مفکرین کا امام خمینی کو خراج

سرینگر/دنیاے اسلام کی تحریک و تاریخ ساز شخصیت بانی انقلاب اسلامی ایران حضرت امام خمینیؒ کی 30ویں برسی کی مناسبت سے انجمن شرعی شیعیان کے شعبہ جامعہ باب العلم کے اہتمام سے ہوٹل سنطور میں پر وقار بین الاقوامی امام خمینی ؒ کانفرنس کا انعقاد ہوا کانفرنس کی صدارت انجمن شرعی شیعیان کے صدر حجۃ الاسلام و المسلمین آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے کی پہلی نشست میں تلاوت کلام پاک کی سعادت قاری سید محمد حسین الموسوی اور دوسری نشست میں قاری قمر علی نے حاصل کی مشہور نعت خوان غلام حسن غمگین نے بارگاہ رسالتؐ میں/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 گل ہاے عقیدت نذر کئے جبکہ نظامت کے فرائض  حجتہ الاسلام سید عابد حسینی حجتہ الاسلام سید عدیل  نے انجام دئیے جن معزز شخصیات نے امام خمینیؒ کو خراج نذر کیا ان میں اسلامی جمہوری ایران کے بلند پایہ عالم دین چانسلر یونیورسٹی آف فرقہ مذاہب اور مہمان خصوصی آیت اللہ ڈاکٹر محمد حسین مختاری ،حرم امام رضا ؑکے نمائندہ ڈاکٹر غلام رضا رئیساں ، ڈاکٹر احمد راہدار ریسیرچ اسکالر دانشگاہ باقر العلوم ،جواہر لال یونیورسٹی کے پروفیسر راما کرشنن ،سینٹرل یونیورسٹی آف کشمیر کے معروف پروفیسرنور احمد بابا ، سابقہ جج جسٹس حکیم امتیازحسین اور غلام حسن بابا ماگام شامل ہے  ڈاکٹر یحیٰ جہا نگیر اور ،سینئر صہافی احمد علی فیاض نے بھی اس کانفرنس میں شرکت کی آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے خطبہ استقبالیہ میں مہمانان گرامی کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ حضرت امام خمینیؒ بلا لحاظ مذہب و ملت مظلومین عالم کے پر خلوص ہمدرد اور ترجمان تھے دینا کی مظلوم اقوام کی حالت زار اور دنیاے اسلام میں مغربی قوتوں کے تباہ کن اثر و نفوذ اور استکباری قوتوں کی ملت اسلامیہ کے خلاف تہذیبی جارحیت نے امام خمینیؒ کو ایران میں اسلامی انقلاب برپا کرنے کی تحریک و ترغیب دی شاہ ایران کو اپنا آلہ کار بنا کر امریکہ اور برطانیہ خطے میں نام نہاد نئے مشرقی وسطیٰ کی تشکیل کی راہوں میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے میں مصروف عمل تھا اگر ایران سے شہنشایت کا خاتمہ ہو کر اسلامی انقلاب برپا نہ ہوتا تو اسرائیل کے پڑوسی مسلمان ممالک صہیونی جارحیت کا شکار ہو کر اپنا جغرافیائی وجود کھو چکے ہوتے آغا حسن نے کہا کہ انقلاب اسلامی ایران نہ صرف دنیاے اسلام میں دینی بیداری کی لہر دوڑائی بلکہ اسرایئل کے توسیع پسندانہ عزائم اور عسکری غرور کاکافی حد تک قلع قمع کیا اور اس ساری مثبت صورت حال کا سر چشمہ حضرت امام خمینیؒ کی ذات گرامی ہے ایران کے بلند پایہ عالم دین اور رئیس دانشگاہ اسلامی آیت اللہ محمد حسین مختاری نے امام خمینی ؒ کے سیرت و کردار کے مختلف گوشوں کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ امام خمینیؒ کے سیرت و کردار میں واضح طور پر انبیائی راہ وروش کی جھلکیاں نظر آتی تھی انکی نیت میں خلوص ایمان میں مکمل پختگی اور ارادے غیر متزلزل تھے اور انھیں اپنے حدف کی سچائی اور کامیابی پر مکمل یقین تھا نمائندہ حرم امام رضا ؑ ڈاکٹر غلام رضا نے امام خمینی ؒ کے افکار و نظریات اور کردار عمل کو اسوح اہلبہتؑ کی عملی تفسیر قرار دیتے ہوئے کہا کہ امام خمینیؒ نے ایرانی قوم عزت و وقار اور دنیاے اسلام کو ذلت قبول نہ کرنے کا عملی درس دیا اس موقعہ پر حرم امام رضا کے نمائندہ حجتہ الاسلام والمسلمین شیخ مدریسی اور انجمن شرعی شیعیان کے نمائندہ ایڈوکیٹ سید منتظر مہدی الموسوی اور رئیس دانشگاہ مذاھب اسلامی آیت اللہ ڈاکٹر محمد حسین مختاری و جامعہ باب العلم کے نمائندہ حجتہ الاسلام سید عابد حسینی کے درمیان دو معا ہدے تے پائے جنکے تحت کشمیری زائیرین اور ایرانی حو زات علمیہ میں حصول تعلیم کے خواہش مند طلاب کو خصوصی رعائتیںاور سہولیات بہم رکھی جائیں گی

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں