محکمہ زراعت کو مستحکم اور نئی بلندیوں تک لیجانے کیلئے پیشہ ورانہ صلاحیتوں کو بروئے کار لایاجائے:ناظم زراعت

سرینگرñ زراعت کو ایک مستحکم ادارے بنانے اور نئی بلندیوں تک لے جانے کیلئے کام میں بہتری اور اپنی پیشہ ورانہ صلاحیتوں کو بروئے لایاجائے ، ان باتوں کا اظہار ناظم زراعت سید الطاف اعجاز اندرابی نے ڈویژنل افسران اور ضلع سربراہاں کی ایک جائزہ میٹنگ کی صدارت کرنے کے دوران کہی۔میٹنگ میں مئی ۹۱۰۲÷ئ کے آخر تک کیپس بجٹ اور مرکزی معاونت والی سکیموں میں ہوئی کامیابیوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ڈائریکٹر موصوف نے افسران پر زور دیتے ہوئے کہا کہ سبھی سکیموں کی وقت مدت تک شفافیت اور احتساب کے ساتھ عمل آوری یقینی بنائیںاور اہداف حاصل کریں۔کئی ڈیلروں کی طرف سے نقلی پسٹی سائڈس و فنجی سائڈس کی فروخت کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ڈائریکٹر موصوف نے انفورسمنٹ ایجنسی کو چوکس رہنے کی ہدایت دیں اور ڈائریکٹر موصوف جو کہ انسکٹی سائڈ /فرٹیلائزر کنٹرولر بھی ہے نے موقع پر ہی سبھی ڈیلروں کو سرکیولر جاری کیا جس میں انہیں ہدایت دی گئی کہ زرعی ماہرین، ہارٹیکلچر ڈیولپمنٹ آفسران ، ایگریکلچر ایکسٹنشن افسران اور ہارٹیکلچر اور ایگریکلچر محکموں کے سبجیکٹ میئٹر سپیشلسٹوں کی تجویز کے بغیر کوئی بھی مصنوعات فروخت نہ کریں ۔خلاف ورزی کرنے والے ڈیلروںکو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ انسکٹی سائڈس ایکٹ کے تحت اُن کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔میٹنگ میں فارمرپروڈیوسنگ آرگنائزیشنس (FPOs) اور سیلف ہیلپ گروپس (SHGs) کو مزید فعال بنانے اور ان کی رجسٹریشن کرنے پر زور دیا گیا ۔مگس بانی ،کھمب اور آلو کو ترقی دینے والی سکیموں، سوائل ہیلتھ کارڈس نابارڈ رپروجیکٹوں اور جیو ٹیگنگ کا بھی میٹنگ میں جائزہ لیا گیا ۔ میٹنگ میں اس بات کی جانکاری دی گئی کہ رواں مالی سال کے دوران ضلع بارہمولہ میں ایک ہائی ٹیک اِنٹی گریٹیڈ مشروم ڈیولپمنٹ/ٹریننگ سنٹر کا قیام عمل میں لایاجائےگا جس کیلئے 2.50کروڑ روپے مختص رکھے گئے ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں