پاکستان کے دفاعی بجٹ میں کوئی تبدیلی نہیں

اسلام آباد،11جون âیواین آئیáسنگین مالی بحران سے دوچار عمران خان حکومت نے منگل کو اپنا پہلا بجٹ پیش کرتے ہوئے دفاعی بجٹ میں کوئی تبدیلی نہیں کی ہے ۔وزیراعظم عمران خان کی موجودگی میں محصولات کے وزیرمملکت حماد اظہر نے 20۔2019کے لیے 7022ارب روپئے کا تخمینی بجٹ پیش کیاہے جس میں دفاعی بجٹ کی رقم رواں مالی سال کے برابر 11 کھرب 50ارب روپئے رکھی گئی ہے ۔کل بجٹ میں رواں مالی سال کے مقابلہ میں 30فیصدکا اضافہ کیاگیاہے ۔مسٹر حماد نے ملک کی معاشی حالت کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ پانچ برسوں میں برآمدات میں اضافہ نہیں ہوا اور مالی بدنظمی کی وجہ سے خسارہ بڑھتاگیا۔ مہنگی درآمدات اور سبسڈی برآمدات نے معیشت کی حالت خستہ کردی ۔ انھوں نے کہاکہ مالی بدنظمی کی وجہ سے خسارہ 2260کروڑروپئے ہوگیا ہے ۔توانائی شعبہ کا قرض 1200ارب روپئے ہوگیا۔انھوں نے کہاکہ حکومت کے اقدامات سے توانائی کا قرض ہرماہ 12ارب روپئے کم ہورہاہے ۔ ختم ہورہے مالی سال میں ملک کے چالو کھاتہ کا خسارہ 20ارب ڈالر اور تجارتی خسارہ 32ارب ڈالر رہا۔محصولات کے وزیر نے کہاکہ آئندہ مالی سال کے لیے بجٹ کو 11کھرب 50ارب روپئے پر برقرار رکھاگیاہے جبکہ غیر فوجی بجٹ 460ارب روپئے سے کم کرکے 437ارب روپئے کیاگیاہے ۔انھوں نے کہاکہ اس وقت ٹیکس کی وصولی مجموعی داخلی پیداوار کی محض 11فیصدہے اور علاقہ میں سب سے کم ہے ۔رجسٹر کمپنیوں میں سے صرف نصف ٹیکس اداکرتی ہیں ۔انھوں نے کہاکہ ،‘‘ہم اس روایت کو تبدیل کریں گے ۔’’غریبی کے خاتمہ کے لیے نئی وزارت تشکیل دینے کااعلان کرتے ہوئے وزیرمحصولات نے کہاکہ سماجی تحفظ کے لیے پروگرام شروع کیے جائیں گے ۔حکومت کی راشن کارڈ اسکیم سے سود سے پاک قرض دیاجائیگا جس سے د80ہزار لوگوں کو فائدہ ہوگا۔مزید 60ہزار خواتین تک موبائل فون پہنچایاجائیگا ۔انھوں نے کہاکہ بجٹ میں 1800ارب روپئے کی رقم ترقیاتی کاموں کے لیے رکھی گئی ہے جس میں 950ارب روپئے وفاقی ترقیاتی کاموں پر خرچ کیے جائیں گے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں