ورلڈکپ :مانچسٹر میں آج افغانستان انگلینڈ کیخلاف زور آزمائی کرے گا

مانچسٹر/یو این آئی/ دنیا کی نمبر ایک ٹیم اور میزبان انگلینڈ آئی سی سی ورلڈ کپ کے پوائنٹس ٹیبل میں نچلے پائیدان کی ٹیم افغانستان کو منگل کو ہونے والے مقابلے میں مکمل طور دھونے کے ارادے سے اترے گی۔بارش سے متاثرہ اپنے گزشتہ مقابلے میں جنوبی افریقہ کے ہاتھوں ہار کر ٹورنامنٹ میں مسلسل چوتھی شکست کا سامنا کر نے والی افغانستان کا اگلا میچ جیت کے گھوڑے پر سوار میزبان انگلینڈ سے منگل کو مانچسٹر میں ہوگا۔ اس مقابلے میں انگلینڈ مضبوط دعویدار ہے جبکہ افغانستان کو ٹورنامنٹ میں رہنے کےلئے کوئی کرشمہ کرنا ہوگا۔یہ مقابلہ افغانستان کےلئے ٹورنامنٹ میں آگے کی تصویر کافی حد تک صاف کرے گا۔ افغان ٹیم کو ورلڈ کپ میں رہنے کےلئے اس مقابلے میں ہر حال میں جیت حاصل کرنی ہوگی۔ افغانستان نے ابھی تک چار مقابلے کھیلے اور اس ٹورنامنٹ میں اپنا اکاؤنٹ کھولنے میں ناکام رہی ہے جبکہ میزبان انگلینڈ نے چار مقابلوں میں تین میچ جیتے ہیں اور اسے واحد ہار پاکستان کے ہاتھوں ملی ہے ۔انگلینڈ نے پاکستان سے ملی شکست کے بعد اپنے گزشتہ دونوں مقابلے جیتے ہیں۔ انہوں نے بنگلہ دیش کو 106 رنز کے بڑے فرق سے اور ویسٹ انڈیز کو آٹھ وکٹ سے شکست دی تھی۔ اگرچہ میزبان ٹیم کےلئے ان کے کپتان مورگن اور اوپنر جیسن رائے کی فٹنس تشویش کا سبب ہے ۔ دونوں ہی کھلاڑی زخمی ہونے کی وجہ سے ویسٹ انڈیز کےخلاف میچ کے درمیان میں ہی میدان سے باہر چلے گئے تھے ۔انگلینڈ کے لئے اچھی بات ہے کہ جیسن رائے کی غیر موجودگی میں اوپننگ کرنے اترے جو روٹ اپنی فارم میں ہیں اور انہوں نے گزشتہ میچ میں سنچری لگائی تھی ۔ اگرچہ روٹ افغانستان کےخلاف نمبر تین کی جگہ اتریں گے کیونکہ رائے کی جگہ جیمز ونس حتمی الیون میں مقام حاصل کر سکتے ہیں۔افغانستان کے پاس اچھے اسپن بولر ہیں جو میچ کا رخ موڑ سکتے ہیں لیکن انہیں اپنی بلے بازی میں انتہائی سدھار کی ضرورت ہے ۔ افغانستان کی ٹیم کو وکٹ پر ٹک کر پورے 50 اوور کھیلنے کی کوشش کرنی ہوگی تبھی وہ میزبان کے سامنے کوئی چیلنج پیش کر پائیں گے ۔انگلینڈ اور افغانستان کے درمیان اب تک صرف ایک مقابلہ ہوا ہے جو 2015 کے گزشتہ عالمی کپ میں ہوا تھا اور انگلینڈ نے یہ میچ ڈک ورتھ لوئیس ضابطے کے تحت نو وکٹ سے جیتا تھا۔
 افغانستان نے 36.2 اوور میں سات وکٹ پر 111 رن بنائے تھے کہ پھر بارش آنے سے کھیل رک گیا تھا۔ کھیل شروع ہونے پر انگلینڈ کو 25 اوور میں 101 رن کا ہدف ملا تھا اور اس نے 18.1 اوور میں ہی ایک وکٹ کے نقصان پر ہدف حاصل کر لیا تھا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں