بڈورہ اچھہ بل میں جائے واردات کے نزدیک نوجوان کی لاش برآمد، علاقے میں کہرام، ہڑتال سے معمولات زندگی مفلوج

اننت ناگ /نیازحسین / شاہ جنید / کے این ایس /سی این آئی /بڈورہ اچھ بل میں گزشتہ روز ہوئی جھڑپ کے مقام سے منگلوار کو اُس وقت کہرام مچ گیا جب یہاں مقامی لوگوں نے ایک نوجوان کی گولیوں سے چھلنی لاش برآمد کی۔ معلوم ہوا کہ 23سالہ ناصر احمد ڈگری کالج اننت ناگ میں فسٹ ایئر کاطالب ہیں۔ اس دوران نوجوان کی ہلاکت کی خبر پھیلنے/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 کےساتھ ہی یہاں مکمل ہڑتال سے تمام قسم کی سرگرمیاں معطل ہوئیں۔  بڈورہ اچھ بل میں گزشتہ روز علی الصبح معرکہ آرائی کے مقام پر سوموار کی صبح اُس وقت کہرام مچ گیا جب مقامی لوگوں نے جائے جھڑپ سے نوجوان کی گولیوں سے چھلنی لاش برآمد کی۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ گزشتہ روز بڈورہ میں ہوئی جھڑپ والے مقام کا لوگوں کی کثیر تعداد مشاہدہ کرنے آرہی تھی کہ اسی اثنا میں یہاں مقامی آبادی نے نوجوان کی گولیوں سے چھلنی لاش برآمد کی جس کی شناخت 23سالہ ناصر احمد میر ولد فیاض احمد میر ساکن چک اچھ بل کے بطور ہوئی۔ معلوم ہوا کہ جائے جھڑپ کا مشاہدہ کرنے کے دوران یہاں لوگوں کی بھیڑ اُمڈ آئی تھی کہ اسی اثنا میں انہوں نے مقام جھڑپ کے قریب نوجوان کی لاش کو پایا۔عینی شاہدین نے بتایا کہ اس موقعے پر پولیس کی ٹیم نے یہاں پہنچ کر لاش کا پوسٹ مارٹم عمل میں لانے کےلئے اسے اپنی تحویل میں لے لیا۔ مقامی لوگوں کے بقول 23سالہ ناصر احمد ڈگر کالج اننت ناگ میں فسٹ ایئر کا طالب علم ہے۔ ادھر نوجوان کی ہلاکت کی خبر پھیلنے کے ساتھ ہی بڈورہ اور مضافاتی علاقوں میں مکمل ہڑتال سے معمولات کی سرگرمیاں مانند پڑگئیں۔ عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ جونہی منگلوار کی صبح بڈورہ میں نوجوان کی لاش کو پایا گیا تو یہاں کہرام مچ گیا جس کے بعد خواتین کی ایک بڑی تعداد کو سینہ کوبی کرتے ہوئے دیکھا گیا۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان کی ہلاکت کی خبر جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی جس کے بعد یہاں آناً فاناً ہڑتال سے تمام قسم کے معمولات مفلوج ہوگئے۔ انہوں نے بتایا کہ ہڑتال کی وجہ سے یہاں تجارتی، کاروباری، عوامی اور غیر سرکاری سرگرمیاں ٹھپ ہوکر رہ گئیں جبکہ اندرون و بیرون سڑکوں سے ٹریفک کی نقل و حمل مکمل طور پر غائب ہوگئی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں