ایودھیا بم دھماکہ معاملہ، چار کو عمر قید،ایک بری

پریاگ راج: 18 جون یواین آئی  اجودھیا میں 5 جولائی 2005 کو ہوئے بم دھماکہ معاملے میں ایک خصوصی عدالت نے پانچ میں سے چار ملزموں کو عمر قید کی سزا سنائی ہے جبکہ محمد عزیر کو تمام الزامات سے بری قراردیتے ہوئے رہا کردیا۔ اسپیشل ججâایس سی/ایس ٹیá دنیش چند نے چاروں پر 2020۔ ہزار روپئے کا جرمانہ بھی لگایا ہے ۔  اس حملے میں جیش محمد کے پانچ شدت پسند اور دو مقامی افرادâرمیش پنڈا اور شانتی دیویá ہلاک ہوئے تھے ۔ جبکہ متعدد سی آر پی ایف کے جوان اس حملے میں زخمی ہوگئے تھے ۔  بم دھماکے بعد پولیس نے پانچ افراد کومنافرت پھیلانے اور دہشت گردوں کو مدد فراہم کرنے وغیرہ جیسے مختلف الزاما ت میں نے پانچ افراد عرفان،عاشق اقبال عرف فاروق،شکیل احمد، محمد نسیم اور محمد عزیر کو گرفتار کیا تھا۔ یہ تمام الہ آباد کے نینی جیل میں قید ہیں۔ ڈاکٹر عرفان کا تعلق اترپردیش کے ضلع سہارنپور سے ہے جبکہ دیگر چار کا تعلق جموں و کشمیر کے ضلع پونچ سے ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں