حوالہ اور ٹیررفنڈنگ کا معاملہ، این آئی اے کی سرگرمیاں بڑھنے لگیں، آسیہ اندرابی کے بعد مزید کئی علیحدگی پسند رہنمائوں کےخلاف کارروائی پرغور

سرینگر/ یو پی آئی /دختران ملت کی سربراہ آسیہ اندرابی کا رہائشی مکان سربمہر کرنے کے بعد قومی تحقیقاتی ایجنسی âاین آئی اے áکی جانب سے گرفتار کئے گئے علیحدگی پسند لیڈروں کے مکانات کو بھی سربمہر کرنے کا امکان ہے اور اس سلسلے میں نئی دہلی میں تحقیقاتی ایجنسی کے آفیسران کے درمیان گفت وشنید جاری ہے۔ تحقیقاتی ایجنسی کے ایک سینئر آفیسر نے بتایا کہ گرفتار شدگان سے پوچھ گچھ کے دوران چونکا دینے والے انکشافات ہوئے ہیں جس سے یہ بات عیاں ہوتی ہے کہ حوالہ اور ٹیرر فنڈنگ کے تار پاکستان کے ساتھ براہ راست جڑے ہوئے ہیں۔ قومی تحقیقاتی ایجنسی âاین آئی اے á کے سینئر آفیسران کی نئی دہلی میں میٹنگ منعقد ہوئی جس دوران مبینہ طورپر حوالہ اور/جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
 ٹیررفنڈنگ میں ملوث علیحدگی پسند لیڈران کے رہائشی مکانات کو سربمہر کرنے پر غور وغوض ہوا۔ ذرائع نے بتایا کہ دختران ملت کی سربراہ آسیہ اندرابی کے رہائشی مکان کو سربمہر کرنے کے بعد تحقیقاتی ایجنسی کی جانب سے گرفتار کئے گئے علیحدگی پسند لیڈروں کی جائیداد کو بھی سربمہر کرنے کا امکان ہے اور اس سلسلے میں ثبوت و شواہد اکھٹا کئے جارہے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مرکزی وزارت داخلہ کی جانب سے قائم کئے گئے ملٹی ایجنسی سینٹر روزانہ کی بنیاد پر ٹیرر فنڈنگ کیسوں کا جائزہ لے رہی ہیں۔ ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ آنے والے دنوں کے دوران مزید کئی علیحدگی پسند لیڈران کے رہائشی مکانات کو سربمہر کرنے کا امکان ہے اور اس سلسلے میں تمام تیاریوں کو آخری شکل دی گئی ہے۔ قومی تحقیقاتی ایجنسی âاین آئی اے á کے ایک سینئر آفیسر نے بتایا کہ گرفتار علیحدگی پسند لیڈروں کے ساتھ پچھلے تین مہینوں سے پوچھ تاچھ ہو رہی ہے جس دوران اہم انکشافات سامنے آئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ تحقیقاتی ایجنسی کو گرفتار علیحدگی پسند لیڈران سے پوچھ گچھ کے دوران ٹیرر فنڈنگ کے حوالے سے اہم سراغ ملے ہیں۔ مذکورہ آفیسر کے مطابق حوالہ فنڈنگ معاملے کی بڑے پیمانے پر تحقیقات ہو رہی ہے اور اس سلسلے میں مزید گرفتاریاں بھی متوقع ہے کیونکہ تفتیش کے دوران مزید کئی افرا دکے نام سامنے آئے ہیں اور اُنہیں بھی گرفتار کرنے کا امکان ہے۔ این آئی اے کے آفیسر نے بتایا کہ گرفتار علیحدگی پسند لیڈروں کے بینک کھاتوں کی جانچ پڑتال کی گئی جس دوران پتہ چلا کہ کئی لیڈروں کے بینک کھاتوں میں غیر قانونی طورپر بڑی رقوم جمع کی گئی ہے اور جب مذکورہ افراد سے پوچھا گیا کہ یہ رقم اُنہیں کہاں سے آئی تو اُن کے پاس اس کا کوئی جواب ہی نہیں ہے۔ تحقیقاتی ایجنسی کے آفیسر کا مزید کہنا تھا ٹیرر اور حوالہ فنڈنگ معاملے کے تار پاکستان کے ساتھ جڑے ہوئے ہیں ۔ یہاں یہ بات قابلِ ذکر ہے کہ تحقیقاتی ایجنسی âاین آئی اے á نے پچھلے ایک سال کے دوران کئی علیحدگی پسند لیڈروں اور کارکنان کو گرفتار کیا ہے جنہیں ملک کی مختلف جیلوں میں مقید رکھا گیا ہے۔ این آئی اے نے چھاپہ مار کارروائی کے دوران بعض مزاحمتی قیادت سے وابستہ لیڈروں کے گھروں سے اہم کاغذات بھی ضبط کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ 

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں