کالج عمارتوں کی تکمیل کیلئے نومبر 2019 ئ کی ڈیڈ لائن مقرر کی  خورشید احمد گنائی نے تعمیراتی کام میں سرعت لانے کی ہدایت دی

سرینگر/گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی نے یہاں ایک میٹنگ طلب کر کے ریاست میں پالی تکنیک کالجوں کے تعمیراتی کام کا جائزہ لیا اور عمل آوری ایجنسیوں کو یہ پروجیکٹ نومبر 2019ئ تک مکمل کرنے کی ہدایت دی۔میٹنگ میں جے کے پی سی سی کے منیجنگ ڈائریکٹر ایم راجو ، تکنیکی تعلیم کے سیکرٹری زبیر احمد ،محکمہ ایڈیشنل سیکرٹری نیرج کمار ، ڈائریکٹر ٹیکنیکل ایجوکیشن ڈاکٹر روی شنکر شرما، چیف انجینئر تعمیرات عامہ سمیع عارف ، چیف انجینئر تعمیر ات عامہ جموں ناصر گونی اور جنرل منیجر جے کے پی سی سی ہر کیول سنگھ کے علاوہ دیگر افسران بھی موجود تھے۔میٹنگ کے دوران مشیر موصوف نے ریاست میں تعمیر کئے جارہے ہر پالی تکنیک کالج پر جاری کام کی پیش رفت کے بارے میں تفصیلات طلب کیں۔ انہیں بتایا گیا کہ 18کالجوں میں سے 10کا کام جموں وکشمیر پروجیکٹس کنسٹرکشن کارپوریشن ، 6کا کام تعمیرات عامہ اور ایک ایک کالج کی تعمیر کا کام اسلامک یونیورسٹی اور بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی کو تفویض کیا گیا ہے۔ان کالجوں پر جاری کام کے تعلق سے سول اور میکنیکل معاملات کا بھی میٹنگ کے دوران جائزہ لیا گیا۔ خورشید احمد گنائی نے رقومات کا استعمال پہلے سے ترتیب دئیے گئے منصوبے کے مطابق کرنے کی ہدایت دی ۔انہیں بتایا گیا کہ کچھ کالجوں پر تعمیر کا کام پہلے ہی مکمل کیا گیا ہے اور ان کالجوں کو تکنیکی تعلیم محکمہ کی تحویل دیا گیا ہے۔سیکرٹری تکنیکی تعلیم نے میٹنگ میں بتایا کہ محکمہ کی تحویل میں دئیے گئے کالجوں کو کارگر بنایا جاچکا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایسے کالجوں کے لئے سازو سامان خریدنے کا عمل شروع کیا جاچکا ہے۔پروجیکٹس کنسٹرکشن کارپوریشن کے منیجنگ ڈائریکٹر نے جانکاری دی کہ اودھمپور ، کپواڑہ اور بانڈی پورہ کے کالجوں کو اس برس 15اگست تک تکنیکی تعلیم محکمہ کی تحویل میں دیا جائے گا۔ متعلقہ چیف انجینئروں نے یقین دلایا کہ پالی تکنیک کالجوں کی تعمیر کا کام نومبر 2019ئ تک مکمل کرنے کے لئے مناسب اقدامات کئے جائیں گے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں