شادی پورہ سمبل میں 2بچے جہلم میں ڈوب کر لقمہ اجل،  لاشیں برآمد کر لی گئیں‘ علاقے میں کہرام

سرینگر/یو پی آئی/شادی پورہ سمبل میں اُس وقت قیامت صغریٰ بپا ہوئی جب دریائے جہلم میں نہانے کے دوران دو کمسن لڑکے غرقآب ہو کر لقمہ اجل بن گئے ۔ معلوم ہوا ہے کہ انتھک کوشش کے بعد کمسن لڑکوں کی لاشیں پانی سے بازیاب کرکے اُنہیں وارثین کے سپرد کیا گیا۔سمبل پولیس نے اسکی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ پولیس اور مقامی لوگوں کی کڑی مشقت کے بعد لاشوں کو پانی سے باہر نکالا گیا۔ خبر رساں ایجنسی یو پی آئی کے مطابق شادی پورہ سمبل سونہ وار ی میں گرم کی تپش سے بچنے کی خاطر دو مقامی کمسن لڑکوں نے دریائے جہلم میں چھلانگ لگائی تاہم پانی کے تیز بہاو نے دونوں کو بہا کر لیا۔  نمائندے کے مطابق آس پاس علاقوں میں خبر پھیلتے ہی لوگ جائے موقع پر پہنچے اور غرقہ آب ہوئے لڑکوں کو تلاش کرنے کیلئے بڑے پیمانے پر کارروائی شروع کی۔ نمائندے نے مقامی لوگوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ ایک گھنٹے کی کڑی مشقت کے بعد دریائے جہلم سے دونوں کمسن لڑکوں کی لاشیں برآمد کی گئیں۔ یو پی آئی نے اس ضمن میں جب ایس ایچ او سمبل کے ساتھ رابط قائم کیا تو انہوںنے اس بات کی تصدیق کی کہ شادی پورہ سمبل میں دو کمسن لڑکے غرقہ آب ہوکر لقمہ اجل بن گئے۔ ایس ایچ او کے مطابق آذان حسین وازہ ولد محمد عباس وازہ اور /جاری صفحہ ۱۱ پر
غازی حسین ڈار ولد شبیر احمد ڈار ساکنان شاہ تولہ سمبل دریائے جہلم میں نہانے کی غرض سے گئے اس دوران دونوں غرقہ آب ہوئے۔ ایس ایچ او کے مطابق پولیس ، مقامی لوگ اور ایس ڈی آر ٹیموں کی انتھک کوشش کے بعد دونوں لڑکوں کی لاشیں برآمد کرکے قانونی لوازمات پورے کرنے کے بعد اُنہیں لواحقین کے سپرد کیا گیا۔ ایس ایچ او نے بتایا کہ آزان حسین اور غازی حسین کی عمر بالترتیب چھ سال اور دس سال ہے۔ نمائندے کے مطابق دونوں لڑکوں کی لاشیں جونہی اُن کے آبائی گھر پہنچائی گئیں تو وہاں کہرام مچ گیا ، خواتین سینہ کوبی کرنے لگیں اس دوران پورے علاقہ ماتم کدے میں تبدیل ہوکر رہ گیا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں