فارسٹ ایڈوائزری کمیٹی کی114 ویں میٹنگ میں عوامی اہمیت کے 31 منصوبے منظور، چیف سیکرٹری نے محکمہ جنگلات کی جانب سے قریبی نگرانی کی ہدایت دی

سر ی نگر/چیف سیکرٹری بی و ی آر سبھرامنیم کی سربراہی والی فارسٹ ایڈوائزری کمیٹی کی114 ویں میٹنگ میں عوامی اہمیت کے مختلف ترقیاتی پروجیکٹوں کی عمل آوری کے لئے87 ہیکٹر اراضی کے استعمال سے متعلق31 منصوبوں کو منظوری دی گئی۔فارسٹ ایڈوائزری کمیٹی نے تفصیلی تبادلہ خیال کے بعد سڑک، ریلویز، ٹیلی کام اور ٹرانسمیشن سیکٹروں میں قواعد و ضوابط کے تحت ان منصوبوں کو منظوری دی۔میٹنگ میں فائنانشل کمشنر مال، کمشنر سیکرٹری جنگلات و ماحولیات، پرنسپل چیف کنزرویٹر جنگلات، کمشنر سیکرٹری تعمیرات عامہ، ڈائریکٹر سوئل اینڈ واٹڑ کنزرویشن، ڈائریکٹر انوارنمنٹ اینڈ ریموٹ سینسنگ، ڈائریکٹر سوشل فارسٹری، چیف وائلڈ لائف وارڈن، منیجنگ ڈائریکٹر ایس ایف سی، چیف کنزرویٹر جنگلات کشمیر اور ماہرین ماحولیات کے علاوہ دیگر کئی افسران موجود تھے۔میٹنگ میں جن منصوبوں کو منظوری دی گئی اُن میں بسوہلی۔ بنی۔ بھدرواہ سڑک کو توسیع دینا، دیسو سے لہنوان مرگن پاس تک پی ایم جی ایس وائی کے تحت سڑک کی تعمیر، رام بن میں این ایچ اے آئی کی جانب سے قومی شاہراہ کی توسیع کے تعلق سے کچرا جمع کرنا، شری امر ناتھ جی کے یاتریوں کے لئے سونہ مرگ/ بال تل اور چندن واڑی میں براڈ بینڈ وائیرلیس سہولیات کو متعارف کرنے کے لئے ٹاور نصب کرنا، جموں خطے کے پونچھ، ریاسی،اودہم پور، رام نگر، بسوہلی، رام بن، مہور اور کشمیر خطے کے کپواڑہ اور بارہ مولہ اضلاع کے دیہی علاقوں میں پی ایم جی ایس وائی کے تحت سڑک سہولیات کی فراہمی شامل ہے۔اس سلسلے میں کم سے کم پیٹروں کی کٹائی اور ضرورت پڑنے پر متبادل جگہ پر زیادہ سے زیادہ پیڑ لگانے پر چیف سیکرٹری نے محکمہ جنگلات کے افسروں کو ہدایت دی کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ کنزرویٹر جنگلات کی سربراہی میں نگرانی کمیٹیاں ان کاموں کی قریبی نگرانی کریں۔چیف سیکرٹری نے متعلقہ ایجنسی کو محکمہ جنگلات کی جانب سے جاری ہدایات پر عملدرآمد کرنے کی ہدایت دی۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں