مسئلہ کشمیر سیاسی اور انسانی مسئلہ ہے:حریت گ، سید علی گیلانی کی صحت کے بارے میںاظہار فکر وتشویش کیا

سرینگر/ حریت کانفرنس گ کی مجلس شوریٰ کا اجلاس جو حریت چیرمین سید علی گیلانی کی صدارت میں منعقد ہونے والا تھا، ان کی خرابیٔ صحت کی وجہ سے یہ اجلاس بعدازاں حریت جنرل سیکریٹری حاجی غلام نبی سمجھی کی صدارت میں حیدر پورہ میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں حریت کانفرنس کی جن اکائیوں کے سربراہان یا ان کے نمائندوں نے شرکت کی ان میں محمد یٰسین عطائی، خواجہ فردووس، بلال احمد صدیقی، محمد یوسف نقاش، غلام محمد ناگو، غلام نبی سمجھی، حکیم عبدالرشید، شاہد سلیم، اقبال شاہین، سید بشیر اندرابی، موولوی بشیر احمد، سید محمد شفیع، فیروز احمد خان، زمرودہ حبیب، محمد مقبول ماگامی اور ارشد عزیز شامل تھے۔ اجلاس میں موجودہ سیاسی اور سماجی صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال کے ساتھ ساتھ حریت چیرمین سید علی گیلانی کی صحت کے بارے میں فکروتشویش کا اظہار کرتے ہوئے ان کی جلد صحت یابی کے لیے دُعا کی گئی اور عوام سے بھی اپیل کی گئی کہ وہ قائد تحریک کی شفایابی کے لیے خصوصی دعاؤں کا اہتمام کریں۔ اجلاس میں جموں کشمیر کے مظلوم عوام کی جائز اور مبنی برحق جدوجہد کو فوجی قوت کے ذریعے کچلنے کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا گیا کہ تنازعہ کشمیر ایک سیاسی اور انسانی مسئلہ ہے اور اس کو طاقت کی بنیاد پر کچلنے کے لیے سامراجی ہتھکنڈے استعمال کرنا اس کی اہمیت اور افادیت اور جمہوری تقاضوں کے بالکل منافی ہے۔ یہ ایک بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ دیرینہ تنازعہ ہے اور اس کو اس کے تاریخی پسِ منظر اور عوامی خواہشات کے مطابق حل کرنے سے ہی جنوب ایشیائ میں پائی جانے والی غیر یقینی صورتحال کو ختم کیا جاسکتا ہے۔ اس مسئلے کی سنگینی اور اس کے حل طلب ہونے سے امن وسلامتی کو خطرات لاحق ہورہے ہیں ان سے بچنے کے لیےصرف ایک ہی راستہ ہے کہ اس کو سردخانے میں ڈالنے کے بجائے اس کے مستقل حل کے لیے سنجیدہ کوششیں کی جائیں۔، کیونکہ اگر اس کو مزید سرد خانے میں ڈالنے کی کوشش کی گئی تو یہ پورے برصغیر کو ختم کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اجلاس میں نوجوا ن نسل کو منشیات کی طرف دھکیلنے پر اپنی گہری تشویش اور فکرمندی کا اظہارکیا۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں