شہدائ کو زانی کہنے والے بتائے کہ عصمت فروشی کو جائز کس نے قرار دیا تھا:انجینئر رشید،  توہین آمیز بیان کے خلاف پیوپلز یونائٹڈ فرنٹ کا احتجاجی مارچ

سرینگر/مہاراجہ ہری سنگھ کے پوتے وکرم آدتیہ سنگھ کی جانب سے 13جولائی1931کے شہدائ کی توہین کئے جانے کے خلاف پیوپلز یونائٹڈ فرنٹ نے انجینئر رشید کی قیادت میں ایک احتجاجی جلوس نکالااور آدتیہ سنگھ کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا۔احتجاجی مظاہرین وکرم آدتیہ سنگھ کے خلاف اورشہدائ کے حق میں نعرہ بازی کرنے کے ساتھ ساتھ نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی سے اس اہم مسئلے کو لیکر کھل کر اپنا موقف واضح کرنے کا مطالبہ کررہے تھے۔مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھارکھے تھے جن پر اور باتوں کے علاوہ یہ مطالبہ بھی درج تھا کہ چونکہ آدتیہ سنگھ کانگریس کے لیڈر ہیں اور نیشنل کانفرنس کا اس پارٹی کے ساتھ اتحاد ہے لہٰذا نیشنل کانفرنس کو اپنی پوزیشن واضح کردینی چاہیئے۔انجینئر رشید کی قیادت والا یہ جلوس پریس کالونی تک گیا جہاں انجینئر رشید نے نامہ نگاروں کے ساتھ گفتگو کی اور وکرم آدتیہ سنگھ کے بیان پر شدید ردعمل کا اظہار کیا۔انہوں نے کہا’’ہم الزامات کا کھیل نہیں کھیلنا چاہتے ہیں لیکن یہ بات کس قدر شرمناک ہے کہ ایک شخص،جو ہری سنگھ کا پوتا ہے،اپنے باپ دادا کے مظالم کیلئے معافی مانگنے کی ہمت کرنے کی بجائے ہمارے ان قومی ہیروز کی کردار کشی کرنے کی جرأت کرتا ہے کہ جنہوں نے انتہائی مشکل حالات میں ظلم کے خلاف آواز ہی نہیں اٹھائی بلکہ اپنی جانوں تک کی قربانی دی ہے۔وکرم آدتیہ سنگھ کو یہ توہین آمیز بیان دینے سے قبل یاد کرنا چاہیئے تھا کہ انہوں نے حال ہی ہوئے لوک سبھا کے انتخابات میں نام نہاد سکیولر فورسز کی ترجمانی کرنے کا دعویٰ کیا تھا اور انہیں ریاست کی دو علاقائی جماعتوں،نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی،کی حمایت حا صل تھی‘‘۔انجینئر رشید نے کہا کہ اب جبکہ وکرم ادتیہ سنگھ کو شرمناک ہار کا سامنا کرنا پڑا ہے وہ فرقہ پرستوں سے بھی زیادہ فرقہ پرست بننے کی کوشش کررہے ہیں اور اسی کوشش میں انہوں نے انتہائی نفرت آمیز بیان دینے کی جرأت کی ہے۔
انہوں نے کہا کہ 1931کے شہدائ نے فقط اسلئے مہاراجہ کے خلاف بغاوت نہیں کی تھی کہ وہ ہندو تھے بلکہ انہوں نے آمریت کے ظالمانہ نظام کے خاتمہ کیلئے جان نچھاور کی تھی۔انجینئر رشید نے کہا کہ شہدائ کو زانی کہنے کی جرأت کرنے سے قبل وکرم آدتیہ سنگھ کو یہ کہنے کی ہمت کرنی چاہیئے تھی کہ ریاست میں عصمت فروشی کو قانونی طور جائز کس نے ٹھہرایا تھا۔انجینئر رشید نے نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی کو یاد دلاتے ہوئے کہا کہ ان دونوں پارٹیوں نے ہمیشہ ہی دلی کے ایجنٹوں کی طرح کام کرتے ہوئے جموں کشمیر میں وقت وقت پر کانگریس اور بی جے پی کا ایجنڈا چلایا ہے اور انہی پارٹیوں کی ترجمانی کی ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں