نیتی آیوگ نے زیر تعمیر پروجیکٹوں کیلئے مختص رقومات روک دیں، سابق حکومت اور موجودہ انتظامیہ مرکزی سرکار کو درکار رقومات اور دیگر اخراجات کے بارے میں تفصیلات فراہم کرنے میں ناکام

سرینگر /اے پی آ ئی/ مرکزی حکومت کی جانب سے قائم کئے گئے نیتی آیوگ نے بھی ریاست کے تئیں سخت موقف اختیار کیا ہے اور آیوگ نے زیرتعمیر پروجیکٹوں کومکمل کرنے کیلئے وزیراعظم اقتصادی پیکیج کے تحت فراہم کی جانے والی رقومات کوفی الحال روک دیاہے  اور ریاستی حکومت کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ 2015سے لے کر  2018کے آخر تک وزیراعظم ہندکی جانب سے 80ہزار کروڑ کے اقتصادی پیکیج میں سے مرکزی حکومت کی جا نب سے فراہم کی گئی رقومات کے بارے میںتفصیلا ت نیتی آ یوگ کوفراہم کرے اورریاست میں زیرتعمیر پروجیکٹوں کیلئے درکار رقوما ت کے بارے میں تفاصیل فراہم کریں ۔ذرائع کے مطابق 2015میں وزیراعظم ہندنریندر مودی کی جانب سے 80ہزارکروڑ کے امدادی پیکیج کے بعداگرچہ پہلے مرحلے پر ریاستی حکومت نے ریاست میں بنیادی ڈھانچے کی تعمیرکے سلسلے میںکروڑوں روپے کی امداد حاصل کی اور کئی پروجیکٹوں کی سنگ بنیاد بھی رکھی تاہم بی جے پی پی ڈی پی مخلوط حکومت کی جانب سے ان پروجیکٹوں کومکمل کرنے کیلئے درکار رقوما ت حاصل کرنے کی خا طرسرکار نے کوئی پہل نہیں کی ہے جس کے نتیجے میںزیرتعمیر پروجیکٹ سنگ بنیاد تک ہی محدود ہو کررہ گئے ۔ذرائع کے مطابق مخلوط حکومت میںاندرونی رسہ کشی شروع ہونے کے ساتھ ہی بیروکریسی نے بھی ریاست میں تعمیراتی ڈھانچے کونامکمل رکھنے کی خا طر بھرپورطریقے سے اپنارول ادا کیااوراب ریاست میں گورنر اورصدر راج کے دوران بھی انتظامیہ نیتی آ یوگ کو تفصیلا ت فراہم کرنے میںناکام ثابت ہوگئی ہے جسکی وجہ سے نیتی آیوگ نے زیرتعمیرپروجیکٹوں کیلئے 141کروڑروپے کی رقم فی الحال روک دی ہے ۔ذرائع کے مطابق نیتی آیوگ کی جانب سے موقف اپنانے کے بعد ریاست جموں و کشمیرمیںمرکزی معاونت سے زیرتعمیر پروجیکٹوں کی تعمیر فی الحال متاثر ہوئی ہے اور نیتی آیوگ نے ریاستی حکومت کواس بات سے آگاہ کیاہے کہ وہ مکمل ہوئے پروجیکٹوں کے سلسلے میں خرچ کی گئی رقومات کے بارے میںنیتی آ یوگ کوپوری تفصیلا ت فراہم کرے اور زیرتعمیر پرجیکٹوں کے لئے درکا ررقوما ت کے بارے میں بھی جانکاری فراہم کرے اس کے بعد ہی نیتی آیوگ ریاست کومذیدرقومات فراہم کریگا ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں