دُنیا کے تقریبا 2000 اساتذہ اور دانشوروں نے جے این یو کے اساتذہ کی حمایت کی

نئی دہلی ،3اگست âیواین آئیáدنیا بھر کے 2000سے زیادہ اساتذہ اور دانشور وں نے جواہر لعل نہرو یونیورسٹی âجے این یوáکے 48اساتذہ کے خلاف فردجرم داخل کرنے کی مخالفت کی ہے اور علمی حلقہ میں اسے اظہار رائے کی آزادی پر حملہ قراردیاہے ۔انھوں نے حکومت سے اسے واپس لینے کا مطالبہ کیاہے ۔اس کے علاوہ 11اہم یونیورسٹیوں کی ٹیچرز ایسوسی ایشن،سنٹرل یونیورسٹیز ٹیچرز ایسوسی ایشن اور آل انڈیا یونیورسٹی اینڈکالج ٹیچرز ایسوسی ایشن اور مغربی بنگال کالج اور یونیورسٹی ٹیچرز ایسوسی ایشن نے بھی جے این یو کے اساتذہ کی حمایت کی ہے ۔جے این یو ٹیچرز ایسوسی ایشن کے صدر اتل سود ،فیڈریشن آف سنٹرل یونیورسٹیز ٹیچرز ایسوسی ایشنزکے صدر راجیو رے کے علاوہ راشٹریہ جنتادل کے راجیہ سبھا رکن اور دہلی یونیورسٹی میں لکچرر منوج جھا اور کالم نگار اپوروا نند نے پریس کلب میں صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے یہ اطلاع دی اور اس سلسلہ میں بیان جاری کیا۔مسٹر سود نے کہاکہ جواہر لعل نہرویونیورسٹی کے اساتذہ کو نیشنل سول سروسزâکنڈکٹ áضابطہ کی آڑ میں دھمکی دی جارہی ہے اور ستایاجارہاہے ۔انھیں بہت زیادہ تنگ کیاجارہاہے جس کی وجہ سے عدالت میں دوسوسے زیادہ معاملے چل رہے ہیں اور دوسوسے زائد اساتذہ کو انتظامیہ نے پریشان کیاہے ۔48اساتذہ کے خلاف فردجرم داخل کیاہے ۔25اساتذہ کے خلاف جانچ چل رہی ہے ،تقریبا 25سے 30اساتذہ کوترقی نہیں دی گئی ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں