بیرون ممالک سے آئے153کشمیر یوں کو قرنطینہ میں رکھا گیا - کورونا وائرس کے ٹیسٹ کرائے جائیں گے،احتیاطی اقدامات سب کےلئے لازمی قرار

کے این ایس : سرینگر/بیرون ممالک سے جمعرات کو 153افراد سرینگر کے ائر پورٹ پر پہنچ گئے ،جنہیں وہیں سے مخصوص قرنطینہ مراکز پر لے جایا گیا ،تاکہ اںکے کورونا وائرس ٹیسٹ کرائے جائیں ۔انتظامیہ نے کہا ہے کہ ایسے افراد کت ٹیسٹ کرانے لازمی ہے ،کیونکہ اُنکی ،اُنکے اہلخانہ اور دیگر افراد کی سلامتی کا سوال ہے ۔ بیرون ممالک سے جمعرات کو153افراد وارد کشمیر پہنچ گئے ۔معلوم ہوا ہے کہ ایک پرواز میں یہ سبھی افراد سرینگر پہنچ گئے ۔معلوم ہوا ہے کہ ائر پورٹ پر پہلے مذکورہ افراد کی اسکریننگ کی گئی جسکے بعد اُنہیں قر نطینہ میں رکھنے کا فیصلہ لیا گیا ۔معلوم ہوا ہے کہ سبھی افراد کو سرینگر کے ائر پورٹ سے ہی قرنطینہ مراکز پر پہنچا یا گیا اور کسی بھی شخص کو گھر جانے کی اجازت نہیں دی گئی ۔حکام کا کہنا ہے کہ مذکورہ افراد کا کورونا ٹیسٹ  کرائیں جائیں گے اور جن جن کے ٹیسٹ منفی آئیں گے اُنہیں گھر جانے کی اجازت دی جائیگی ۔تاہم کورونا وائرس کی علامات جاننے کےلئے ایسے افراد کو 14دنوں تک الگ تھل رکھنا لازمی ہے ۔اس دوران یہ بھی الزامات سامنے آئے ان افراد میں سے کئی افراد کو اثر ورسوخ کی بنیاد پر گھر جانے کی اجازت دی گئی ،تاہم ضلع ترقیاتی کمشنر بڈگام طارق احمد گنائی نے بتایا کہ کسی بھی شخص کو ائر پورٹ سے گھر جانے کی اجازت نہیں دی گئی ۔ان کا کہناتھا کہ ایسے افراد کو قر نطینہ میں رکھنا لازمی ہے جبکہ اُن کا کورونا ٹیسٹ بھی کرانا ضروری ہے ۔انہوں نے کہا کہ ایسا کرنا مختلف ممالک سے واپس کشمیر لوٹے افراد ،اُنکے اہلخانہ اور دیگر افراد کی سلامتی اور صحت کےلئے ضروری ہے ۔انہوں نے اُن الزامات کو مسترد کیا کہ بعض افراد کو قرنطینہ میں رکھے بغیر ہی گھروں کو جانے کی اجازت دی گئی ۔ان کا کہناتھا کہ ایک بھی شخص کو گھر جانے کی اجازت نہیں دی گئی ،کیونکہ یہ صحت اور سلامتی کا معاملہ ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں