واگہ سرحد پر درجنوں کشمیری طلبہ پھنس کر رہ گئے - وزیرخارجہ اور لیفٹیننٹ گورنر سے فوری مداخلت کی اپیل

اے پی آئی : سرینگر/کرونا وائرس کی وبائی بیماری پھوٹ پڑنے کے بعد پاکستان نے واگہ سرحد کو سیل کردیا ہے جسکے نتیجے میں جموں وکشمیرسے تعلق رکھنے والے طلبہ اورپاکستان گئے ہوئے کئی افرادواگہ سرحدپرپھنس کررہ گئے ہےں جبکہ کئی پاکستانی شہری بھی اس طرف پاکستان جانے کابے صبری کے ساتھ انتظارکررہے ہیں ۔کروناوائرس سے محفوظ رہنے کیلئے بھارت پاکستان نے کئی ممالک کے ساتھ ہوائی اورزمینی ربطہ فی الحال منقطع رکھنے کافیصلہ کرلیاہے پاکستانی رینجرس کی طرف سے جاری کئے گئے ایک بیان میںپاکستانی واگہ سرحد  کوسیل کردینے کے احکامات جاری کردیئے ہیں جس کے نتیجے میںآر پاررہنے والے طلاب تاجراوردوسرئے  لوگ واگہ سرحد کے آرپارپھنس کررہ گئے ہیں ۔واگہ سرحدکے سیل کردینے کے  باعث وادی سے تعلق رکھنے والے کئی طلاب اوردوسری افرادجو پاکستان اپنے رشتہ داروں سے ملنے گئے تھے واگہ سرحد کے آرپارپھنس کررہ گئے پاکستان میں زیرتعلیم طلاب نے وزیراعظم وزیرداخلہ وزیرخارجہ اور لیفٹیننٹ گورنرسے اپیل کی ہے کہ انہیں اپنے گھروں تک پہنچناے کے لئے اقدامات اتھائے جائےں اور واگہ سرحد سے انہیں ملک میں داخل ہونے کے لئے پاکستانی انتظامیہ کے ساتھ رابطہ قائم کیاجائے ۔ادھرواگہ سرحدپرپھنسے طلاب اوردوسرے لواحیقن نے بھی  ان کے درماندہ ہونے پرفکروتشویش کااظہارکرتے ہوئے سرکارسے مداخلت کی اپیل کی ۔  

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں