کورونا بحران: وزیر اعظم ہندکا قوم سے خطاب

’زیادہ محتاط رہنے کی ضرورت‘ نومبر تک غریبوں کو ملے گا مفت راشن، 80 کروڑ لوگوں کو فائدہ ہوگا:مودی

نیوز ایجنسیز: نئی دہلی /وزیر اعظم ہند نریندر مودی نے ملک میں جاری کورونا بحران پر چھٹی مرتبہ قوم سے خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا کہ غریبوں کو نومبر تک مفت راشن ملے گا ۔17منٹ کے خطاب میں انہوں نے کہا کہ اس اسکیم سے ملک کے80کروڑ لوگوں کو براہ راست فائدہ ہوگا۔انہوں نے کہا کہ اب ہم’ ان۔ لاک2‘ میں داخل ہورہے ہیں اور ایسے وقت میں داخل ہورہے ہیں جب سردی ، زکام اور بخار کا موسم بھی شروع ہونے والا ہے، ہمیں زیادہ محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ملک میں جاری کورونا وائرس کے قہر کے درمیان وزیر اعظم ہند نریندرمودی نے قوم کے نام خطاب کیا۔ وزیر اعظم ہند نے اپنے17منٹ خطاب میں اعلان کیا کہ پردھان منتری غریب کلیان یوجنا کے تحت غریبوں کو مفت راشن کی اسکیم کو5 مہینے بڑھایا جارہا ہے۔ان اکا کہناتھا کہ اب یہ اسکیم نومبر تک ملک میں لاگو رہے گی جبکہ اس اسکیم کے تحت غریبوں کو 5 کلوگرام مفت گیہوں یا چاول اور ایک کلو گرام چنا دیا جائے گا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ اس اسکیم کو نومبر تک لاگو کرنے میں 90 ہزار کروڑ کا اضافی خرچ آئے گا۔ وزیر اعظم نے یہ بھی کہا کہ جب سے یہ اسکیم شروع ہوئی ہے، تب سے نومبر تک اس میں ڈیڑھ لاکھ کروڑ تک کا خرچ آئے گا۔انہوںنے کہا کہ ہم کورونا کے ساتھ ساتھ ایسے موسم میں داخل ہورہے ہیں ، جس میں تمام طرح کی بیماریاں ہوتی ہیں اور ایسے میں سبھی کو اپنا خیال رکھنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا’ میری آپ سے اپیل ہے کہ اپنا خیال رکھیں، ان لاک ہونے کے بعد سے لاپروائی بڑھ رہی ہے، پہلے ماسک لگانے اور دو گز کی دوری اور ہاتھ دھونے کو لے کر ہم محتاط تھے ، لیکن جب زیادہ خیال رکھنا ہے ، تو ہم لاپروائی برت رہے ہیں، ہمیں پھر سے پہلے جیسی ہی احتیاط برتنے کی ضرورت ہے، خاص کر کنٹینمنٹ زون میں، ضابطوں پر عمل نہ کرنے والوں کو روکنا ، ٹوکنا اور سمجھانا بھی ہوگا‘۔وزیر اعظم ہند نریندر مودی نے کہا کہ ہندوستان میں مقامی انتظامیہ کو چستی سے کام کرنا ہوگا، تاکہ لوگ لاپروائی نہ برتیں۔ ان اکا کہناتھا کہ ہندوستان میں خواہ گاوں کا پردھان ہوا یا ملک کا وزیرا عظم کوئی بھی قانون سے اوپر نہیں ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ لاک ڈاون کے دوران ملک کی اولین ترجیح رہی کہ ایسے حالات پیدا نہ ہوں کہ کسی غریب کے گھر میں چولہا نہ جلے۔ مرکزی حکومت ہو ، ریاستی حکومتیں ہوں یا سول سوسائٹی کے لوگ ہوں ، سبھی نے پوری کوشش کی کہ اتنے بڑے ملک میں ہمارا کوئی غریب بھائی بہن بھوکا نہ سوئے۔ نریندرمودی نے کہا کہ ملک یا شخص ، وقت پر سنجیدگی سے فیصلہ لینے سے کسی بھی بحران کا مقابلہ کرنے کی طاقت بڑھ جاتی ہے ، اس لئے لاک ڈاون ہوتے ہی حکومت پردھان منتری غریب کلیان یوجنا لے کر آئی۔ گزشتہ تین مہینوں میں 20 کروڑ غریب کنبوں کے جن دھن کھاتوں میں براہ راست 31 ہزار کروڑ روپے جمع کروائے گئے ہیں۔ اس دوران نو کروڑ سے زیادہ کسانوں کے بینک کھاتوں میں 18 ہزار کروڑ روپے جمع ہوئے ہیں۔وزیر اعظم نے کہا کہ ایک بڑی بات ہے ، جس نے دنیا کو بھی حیران کیا ہے۔ وہ یہ کہ کورونا سے لڑتے ہوئے ہندوستان میں80 کروڑ سے زیادہ لوگوں کو تین مہینے کا رمشن یعنی کنبہ کے ہر رکن کو پانچ کل گیہوں یا چاول مفت دیا گیا۔ ایک طرح سے دیکھیں تو امریکہ کی کل آبادی سے ڈھائی گنا زیادہ لوگوں کو ، برطانیہ کی آبادی سے بارہ گنا زیادہ لوگوں کو اور یوروپی یونین کی آبادی سے تقریبا دوگنے سے زیادہ لوگوں کو ہماری حکومت نے مفت میں اناج دیا ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں