دنیا میں توسیع پسندی کا نہیں بلکہ ترقی کی جنگ کا دور چل رہا ہے

وزیر اعظم لداخ پہنچے ،سرحدی سلامتی کی بنیادی صورتحال کا جائزہ لیا - گلوان کی بہادری سے فوج نے ملک کی طاقت کا پیغام دیا: مودی
یو این آئی : لیہہ/ وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ دنیا میں توسیع پسندی کی جنگ کا زمانہ ختم ہوچکا ہے بلکہ ترقی کے جنگ کا دور چل رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ توسیع پسندی کی جنگ لڑنے والوں کو یا تو ہمیشہ شکست سے دوچار ہونا پڑا ہے یا واپس لوٹنا پڑا ہے ۔موصوف نے ان باتوں کا اظہار یہاں جمعہ کے روز نمو نامی فارورڈ علاقے میں فوجی جوانوں سے خطاب کے دوران کیا۔انہوں نے کہا: 'توسیع پسندی کے جنگ کا دور ختم ہوچکا ہے اور آج ترقی کی جنگ کا دور چل رہا ہے اور تیزی سے بدلتے ہوئے وقت میں ترقی کی جنگ ہی اہمیت کی حامل ہے '۔نریندر مودی نے فوجی جوانوں سے مخاطب ہوکر کہا: 'آپ اور آپ کے ساتھیوں نے جس بہادری کا مظاہرہ کیا ہے اس سے دنیا میں بھارت کی طاقت کا پیغام پھیل گیا ہے ، آپ کا حوصلہ ان پہاڑیوں سے بھی بلند ہے جن پر آپ دیش کے تحفظ کے لئے مامور ہیں۔گلوان وادی میں ہلاک ہونے والے فوجی جوانوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے انہوں نے کہا: ' چودھویں کور سے وابستہ جوانوں کی بہادری کی باتیں ہر جگہ ہورہی ہیں اور آپ کی بہادری اور حوصلے کی کہانیوں کی باز گشت بھارت کے ہر گھر میں سنائی دے رہی ہے '۔موصوف وزیر اعظم نے کہا کہ جو کمزور ہوتے ہیں وہ کبھی بھی قیام امن کی پہل نہیں کرتے ہیں کیونکہ امن قائم کرنے کے لئے کی جانے والی پہل کی بنیادی شرط بہادری ہے ۔انہوں نے کہا کہ دنیا میں جنگ ہوئے ہیں یا امن رہا ہے ہمیشہ بہادروں کو فتح سے ہمکنار ہوتا ہوا دیکھا گیا ہے اور ہم نے ہمیشہ انسانیت کی بقا کے لئے کام کیا ہے ۔نریندر مودی نے کہا: 'میں سامنے بیٹھی خواتین سپاہیوں کو دیکھ رہا ہوں سرحد پر میدان جنگ میں یہ منظر انتہائی ہمت افزا ہے '۔انہوں نے کہا کہ ہم نے سرحدی علاقوں میں انفراسٹریکچر اور دوسرے خرچہ جات میں تین گنا اضافہ کیا ہے ۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے چینی فوجیوں کے ساتھ پ±رتشدد تصادم کے دوران فوج کے جوانوں کی غیر معمولی بہادری کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ آج فوج نے پوری دنیا کو ہندوستان کی طاقت کا پیغام دیا ہے اور ساتھ ہی طن عزیز کو ملک کی حفاظت کی یقین دہانی کرائی ہے ۔مشرقی لداخ کے وادی گلوان علاقے میں، پچھلے 15 جون کو، چینی فوج کے ساتھ جھڑپ کے بعد، فوج کی حوصلہ افزائی کے لئے آج صبح لدخ پہنچنے والے مسٹر مودی نے نیمو میں فوج، انڈو تبت سرحدی پولیس اور فضائیہ کے بہادر جوانوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فوج نے اپنی بہادری سے ہندوستان کی طاقت پوری دنیا تک پہنچا دی ہے ۔ قومی شاعر رامدھاری سنگھ دنکر کی ایک نظم کی چند سطروں کا حوالہ دیا۔ انہوں نے کہا،[؟]میں آج آپ کو اپنی آوازسے آپ کو ‘جے ’ اور سلام کرتا ہوں[؟]۔ انہوں نے وادی گلوان میں ہندوستانی فوجیوں کی بہادری کو عروج قرار دیتے ہوئے کہا،[؟]فوج کے جوانوں کی طاقت سے زمین سلام کر رہی ہے ۔ ملک کے باشندوں کاسر عزت اور احترام کے ساتھ آپ کو سلام کرتے ہیں اور انہیں آپ پر فخر ہے ۔ [؟]انہوں نے گلوان میں شہید ہونے والے فوجیوں کو دلی خراج عقیدت بھی پیش کیا۔چین پر بالواسطہ اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ امن سے ہماری وابستگی کو ہماری کمزوری نہیں سمجھا جانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ ترقی کے لئے سب امن اور دوستی کے حق میں ہے لیکن یہ بھی سچ ہے کہ کمزور امن نہیں لا سکتا۔ انہوں نے کہا، [؟]بہادری امن کی پیشگی شرط ہے ۔[؟]اس کے پیش نظر، ہندوستان نے آسمان، پانی، زمین اور خلا میں اپنی طاقت میں اضافہ کیا ہے اور اس کا مقصد انسانیت کی فلاح ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دنیا نے ہندوستان کی طاقت اور امن دونوں کوششوں کو دیکھا ہے ۔چین کا نام لئے بغیر اس کو نشانہ بناتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا کہ توسیع پسندی کا دور ختم ہوچکا ہے اور یہ ترقی پسندی کا دور ہے ۔ اب ترقی لازمی ہے اور یہی مستقبل کی بنیاد ہے ۔ یہ بات مشہور ہے کہ توسیع پسندی کے اصرار نے ہمیشہ انسانیت کو خطرے میں رکھا ہے ۔ انہوں نے ان قوتوں کو متنبہ کرتے ہوئے کہا، [؟]تاریخ گواہ ہے کہ یا تو اس کی طاقت مٹ گئی یا پھر انہیں رجوع کرنے پر مجبور ہونا پڑا ہے ۔[؟]انہوں نے کہا کہ اس بار پھر سے پوری دنیا نے توسیع پسندی کے خلاف اپنا ذہن تیار کیا ہے اور ترقی کے مسابقت کا خیرمقدم کیا ہے ۔وزیر اعظم نے کہا کہ ملک فوج کے جوانوں کا مقروض ہے اور ان سے تحریک لیتے ہوئے ، 130 کروڑ ملک کے باشندے ان کے خواب کا ہندوستان بنانے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔ حکومت فوج کی ضروریات کو پورا کرنے اور انہیں جدید ترین اسلحہ سے آراستہ کرنے کے لئے ہر ممکن اقدامات کر رہی ہے ۔ دور دراز علاقوں انفراسٹرکچر سہولیات اور اسٹریٹجک اہمیت کی ضرورتوں کو بھی پورا کیا جارہا ہے ۔ اسی کے ساتھ ملک سرحد کی حفاظت کرنے والے فوجیوں کے اہل خانہ کے ساتھ متحد ہوکر کھڑا ہے ۔وادی گلون میں چینی فوجیوں کے ساتھ دو دو ہاتھ کرنے والی چودہویں کور کے جوانوں کی بہادری کی تعریف کرتے ہوئے انہوں نے کہا،[؟]مادر ہند کے دشمنوں نے آپ کی ‘فائر’ اور‘فیوری’ (غصے ) کو دیکھا ہے ۔[؟] ملک کے گھر گھر میں آپ کی بہادری کی بازگشت سنائی دے رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب بھی وہ ملک کے دفاع کے بارے میں سوچتے ہیں تو وہ دو ما¶ں کے بارے میں سوچتے ہیں، پہلیمادر ہند اور دوسری ماں جس نے ہیرو کو جنم دیا ہے جو سرحد کی حفاظت کرتے ہیں۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں