کووڈ سے متعلق جانکاری دلانے کیلئے دینی رہنماوں او رسرکردہ شخصیتوں کی خدمات حاصل کی جائیں

لیفٹننٹ گورنر کی افسروں کو تلقین ،وائیرس کیخلاف کام کرنے والے ہیلتھ ورکروں کو مزید مراعات دینے پر غور ہورہا ہے

سرینگر/لیفٹننٹ گورنر منوج سنہا نے کل ان ہیلتھ ورکروں اور فرنٹ لائین پر کورونا کے خلاف کام کرنے والوں کے ان اقدامات کو سراہا جو وہ اس وائیرس کو ختم کرنے کے لئے کررہے ہیں ۔انہو ں نے کہا کہ حکومت ان کو اضافی مراعات دینے کے بارے میں غور کررہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ان کے لئے جو پچاس لاکھ کا بیمہ کروایا گیا ہے اس کے علاوہ بھی حکومت ان کے لئے کچھ کرنے کا ارادہ رکھتی ہے ۔لفیٹنٹ گورنر اس اعلی سطحی اجلاس سے خطاب کررہے ہیں جس میں انہوں نے حکومت جموں کشمیر کی طرف سے وائیرس پر قابو پانے کے لئے کئے جانے والے اقدامات کا جائیزہ لیا ۔انہوں نے متعلقہ افسروں پر زور دیا کہ وہ کووڈ کے بارے میں جانکاری دلانے کے لئے دینی رہنماوں ،سرکردہ شخصتیوں وغیرہ کی خدمات حاصل کریں تاکہ وہ لوگوں کو یہ سمجھا سکینگے کہ ماسک لگانے ،سماجی فاصلے برقرار رکھنے اور گائیڈ لائینز پر عمل درآمد کس طرح ضروری ہے ۔انہوں نے متعلقین ؛پر زور دیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ وقت وقت پر مرکزی حکومت اور یوٹی انتظامیہ کی طرف سے جو احتیاطی اقدامات اٹھانے کے سلسلے میں گائیڈ لائینز جاری کی جارہی ہیں اور خاص طور پر ماسک پہننے کے حوالے سے اس پر لوگ پوری طرح عمل کررہے ہیں ۔مسٹر منوج سنہا نے وادی میں کووڈ کے بڑھتے ہوے معاملات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوے کہا سرینگر ،بارہمولہ اور پلوامہ کی طرف خصوصی توجہ دی جاے تاکہ کووڈ کے بڑھتے ہوے اثر کو کم کیاجاسکے ۔انہوں نے کہا کہ موجودہ کرائیسس میں یہ بات یقینی بنائی جانی چاہئے کہ مریضوں کو مناسب مقدار میں آکسیجن میسر ہوسکے ۔اس موقعے پر فائینانشل کمشنر ہیلتھ اینڈ میڈیکل ایجو کیشن اتل ڈولو نے کہا کہ رپیڈ انٹنجنٹ ٹیسٹوں میں سرعت لائی جارہی ہے اور گذشتہ پانچ دنوں میں اٹھارہ ہزار ٹیسٹ کئے گئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ مرکزی وزارت صحت کی طرف سے 432وینٹی لیٹرز یہاں بھیجے گئے ہیں جن کو مختلف ہسپتالوں میں نصب کرنے کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔میٹنگ میں مشیروں نے بھی شرکت کی ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں