سانبہ میں فوج کا دراندازی کی کوشش ناکام بنانے کا دعویٰ دونوں اطراف شدید گولیوں کا تبادلہ5 جنگجو  واپس پاکستانی زیر انتظام کشمیر کی طرف بھاگ گئے:دفاعی ذرائع

یو پی آئی : سرینگر/بین الاقوامی سرحد سانبہ میں فوج نے دراندازی کی کوشش کو ناکام بنانے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہاکہ پانچ ملی ٹینٹوں پر مشتمل ایک گروپ نے اس طرف آنے کی کوشش کی جس دوران فوج اور ملی ٹینٹوں کے درمیان شدید گولیوں کا تبادلہ ہوا۔ دفاعی ذرائع نے بتایا کہ کئی گھنٹوں تک دوبدو فائرنگ کے بعد عسکریت پسند واپس پاکستانی زیر انتظام کشمیر کی طرف چلے گئے۔ سانبہ میں سرحد پر فوج اور عسکریت پسندوں کے مابین جھڑپ ہوئی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ عسکریت پسندوں کے ایک گروپ نے اتوار اعلیٰ الصبح اس طر ف آنے کی کوشش کی تاہم بھارتی افواج نے ملی ٹینٹوں کو للکارا جس دوران شدید گولیوں کا تبادلہ شروع ہوا۔ ذرائع نے بتایا کہ کئی گھنٹوں تک دوبدو فائرنگ کا تبادلہ جاری رہنے کے بیچ ملی ٹینٹ واپس پاکستانی زیر انتظام کشمیر کی طرف چلے گئے۔ دفاعی ذرائع کے مطابق پانچ عسکریت پسندوں پر مشتمل ایک گروپ نے بھارتی حدود میں گھسنے کی کوشش کی تاہم فوج نے اُن کے اس منصوبے کو ناکام بنایا۔ دفاعی / جاری صفحہ نمبر ۱۱پر
ذرائع نے بتایا کہ دراندازی کے دوران پاکستانی رینجرس نے بھارتی چوکیوں کو ہلکے اور بھاری ہتھیاروں سے بھی نشانہ بنایا تاہم فوج نے پاکستان کے سبھی منصوبوں کو ناکام بنایا ہے۔ دفاعی ذرائع نے بتایا کہ پاکستان برفباری سے قبل بڑی تعداد میں عسکریت پسندوں کوا س طرف بھیجنے کی منصوبہ بندی کررہا ہے تاہم سرحدوں پر تعینات افواج کو چوبیس گھنٹے متحرک رہنے کے احکامات صادر کئے گئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ سرحدوں کی صورتحال پر خصوصی نظرگزر رکھی جارہی ہیں۔ دفاعی ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان جموںوکشمیر میں حالات کو درہم برہم کرنے کی کوششوں میں مصروف ہے تاہم فوج کسی بھی چیلنج کا مقابلہ کرنے کیلئے تیار ہیں۔ انہوںنے کہاکہ ڈرون کے ذریعے عسکریت پسندوں تک ہتھیار پہنچانے کے واقعات رونما ہونے کے بعد بین الاقوامی سرحد اور حد متارکہ پر تعینات افواج کو چوبیس گھنٹے متحرک رہنے کے احکامات صادر کئے گئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان اب نئی حکمت عملی اپنا رہا ہے تاہم فوج نے بھی پاکستان کے منصوبوں کو ناکام بنانے کی خاطر اپنی حکمت عملی تبدیل کی ہے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں