دنیا بھر کی طرح وادی میں بھی خوراک کاعالمی دن منایا گیا - آر ٹی آئی مومنٹ کی جانب سے سیول سپلائز خوراک محکمہ کےخلاف احتجاجی ریلی کااہتمام

 اے پی آ ئی : سرینگر/دنیا بھر میں غذائی اجناس کا عالمی دن منایاگیا ترقی پذیر اورترقی یافتہ ملکوں میں اس حوالے سے تقاریب کااہتمام کیاگیا جسکے دوران قحط زدہ ملکوں میں غذائی اجناس کی قلت پرتشویش کااظہار کرتے ہوئے اقوم متحدہ اور ترقی پذیرملکوں پرزوردیاگیاکہ وہ ان ملکوں میں غذائی اجناس پہنچانے کے خاطراپنے وسائل استعمال میں لائے تا کہ دنیامیں جن تیس سے چالیس کروڑلوگوں کوغذائی اجناس کی قلت سے دو چار ہوناپڑرہاہے انہیں اس سے چھٹکارا مل سکے ۔مختلف ملکوں میں منعقدکی گئی تقریبات کے دوران مقررین نے ا س بات پربھی فکرمندی کااظہار کیاکہ زائدالمیعاد اورمضرصحت غذائی اجناس فراہم کرنے میں بھی کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں کیاجارہاہے اور اس سلسلے میں حکومتوں کی جانب سے لوگوں کی زندگیوں کے ساتھ کھلواڑکرنے کی کارروائیوں کوروکنے کے لئے اقدامات نہیں اٹھائے جارہے ہیں ۔  ادھر جموں وکشمیر میں بالعموم اور وادی کشمیرمیں بالخصوص آرٹی آ ئی مومنٹ کی جانب سے غذائی اجناس کئے عالمی دن کے موقعے پرآرٹی آئی کے سربراہ ڈاکٹرراجامظفربٹ کی سربراہی میں ایک احتجاج ریلی نکالی گئی ریلی میں شامل افرادنے بینر ہاتھوں میں اٹھارکھے تھے اور وہ مطالبہ کررہے تھے کہ امورصارفین عوا می تقسیم کار کے محکمہ راشن گھاٹوں پرڈیجٹل ترازوں کے احکامات کاغذوں تک محدود ہوکررہ گئے ہے اور اس سلسلے میں صوبائی انتظامیہ کی جانب سے موثراقدامات نہیں اٹھائے جارہے ہیں ۔
۔ریلی میں شامل لوگوں نے راشن گھاٹوں پرڈیجٹل ترازوں نصب کرنے کامطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ بی جے پی پی ڈی پی دورحکومت میں اس وقت کے امورصارفین کے وزیرچودھری ظلفکار نے ڈیجٹل ترازوں کے ساتھ ساتھ جدیدیت لانے کاوعدہ کیاتھااو اے اے وائی کنبوں کوغذائی اجناس فوری طور پرفراہم کرنے اور ایسے کنبوں کی مزیدنشاندہی کرنے کابھی وعدہ کیاتھا تاہم مخلوط حکومت کے گرجانے کے بعداس سلسلے میں کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی جس کے نتیجے میں ڈیجٹل ترازوں نصب کرنے اورغریبی کی سطح سے نیچے زندگی بسرکرنے والے کنبوں کوغذائی اجناس فراہم کرنے کاوعدہ بھی کھوکھلاثابت ہوا ۔ 

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں