1971کے جنگ میں ضبط سامان اگرتلا سے منتقل کرنے پر حکومت کی تنقید

گرتلا،16 نومبر(یواین آئی) تریپورہ حکومت کو 1971 کے ہندوستان - پاکستان کی جنگ کے دوران ضبط کئے گئے ایک ٹینک اور توپ خانے کی بندوق کو اگرتلا واقع چومہانی ڈاک گھر سے لیچی باغان کے البرٹ ایکا وار میموریل میں منتقل کرنے کے بعد سخت تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔سیاسی پارٹیون کے علاوہ شہر کے دانشوروں اور عام لوگ بھی حکومت کے اس فیصلے کی مخالفت کرتے ہوئے الزام لگایا ہے کہ حکومت تریپورہ کے تاریخ کو مٹانے کے لئے سوچ سمجھ کر قدم اٹھا رہی ہے ۔ضلع انتظامیہ نے اس طرح کے الزامات کی تردید کرتے ہوئے دعوی کیا کہ ٹینک اور توپ خانے کی بندوق کو اسمارٹ سٹی پروجیکٹ کے تحت تاریخی سامان کی حفاظت کے مقصد سے دوسری جگہ منتقل کی گئی ہے ۔مغربی تریپورہ ضلع مجسٹریٹ اور اگرتلا اسمارٹ سٹی پروجیکٹ کے سی ای او ڈاکٹر شیلیش کمار یادو نے کہا کہ لیچوباغان میں ہندوستانی فوج کی ایک چھوٹی جنگی یادگار ہے جسے حال ہی میں 1971 کی جنگ میں شہید ہونے والے لانس نائک البرٹ اکا کو مختص کیا گیا ہے ۔البرٹ اکا کو پرم ویر چکر سے نوازا گیا ہے ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں