پاکستان افغانستان میں قیامِ امن کا خواہاں : عمران خان - ہم چاہتے ہیں کہ افغانستان میں تشدد رُکے اور مکمل جنگ بندی ہو سکے

اسلام آباد / 19نومبر/ ایجنسیز/ - افغانستان کے ایک روزہ دورے میں کابل میں افغان صدر اشرف غنی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیرِ اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ایسے وقت میں کابل کا دورہ کرنے کا مقصد، جب افغانستان میں تشدد میں اضافہ ہو رہا ہے، یہ ہے کہ پاکستان افغانستان میں قیامِ امن کا خواہاں ہے۔ عمران خان نے کہا کہ اس دورے کا مقصد اعتماد سازی، ابلاغ میں اضافہ اور افغانستان کو پاکستان کی قیامِ امن کی کوششوں کی یقین دہانی کرانا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ افغانستان کے عوام چار دہائیوں سے مشکلات کا شکار ہیں۔ سب افغانستان میں امن کے قیام کے خواہاں ہیں۔ پاکستان کے وزیراعظم نے کہا کہ امریکہ کے ساتھ طالبان کے مذاکرات اور پھر بین الافغان مذاکرات میں اسلام آباد نے اپنا کردار ادا کیا۔ عمران خان نے کہا کہ قطر میں جاری مذاکرات کے باوجود افغانستان میں تشدد میں اضافہ ہو رہا ہے۔ وزیرِ اعظم کا کہنا تھا کہ اس وقت دورہ کرنے کا مقصد یہ ہے کہ اس بات کی یقین دہانی کرائی جائے کہ جس طرح ممکن ہو پاکستان قیام امن میں اپنا کردار ادا کرے اور افغانستان میں تشدد میں کمی آئے۔ اور مکمل جنگ بندی ہو سکے۔ عمران خان نے دونوں ممالک میں ابلاغ کے لیے کئی کمیٹیاں بنانے کا بھی ذکر کیا جس کی تائید افغان صدر اشرف غنی نے بھی کی۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ کابل جب بھی محسوس کرے کہ پاکستان کسی بھی طرح تشدد میں کمی کے لیے کردار ادا کر سکتا ہے تو اسلام آباد کو آگاہ کیا جائے۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں