’’ روشنی اسکینڈل کی تحقیقات‘‘ سیاسی لیڈران کو مرعوب کرنے کا حربہ - روشنی ایکٹ کے تحت ایک انچ بھی زمین نہیں خریدی : ڈاکٹر فاروق

ڈی ڈی سی انتخابات میں عوام پیپلز الائنس کے امیدواروںکے حق میں ووٹ ڈالیں، کہا مخالفین کو ووٹ ڈالنا پیپلز الائنس کےلئے نقصان دہ

یو پی آئی ؍الفا نیو ز سروس : سرینگر؍مبینہ روشنی اسکینڈل کی تحقیقات کو سیاسی لیڈران پر دباو بڑھانے کی سازش سے تعبیر کرتے ہوئے پیپلز الائنس کے سربراہ ڈاکٹرفاروق عبداللہ نے کہا کہ اس طرح کے ہتکھنڈوں کا مقصد ایسے لیڈران کو دباو میں لانا ہے جو کہ موجودہ سرکار کی نظریات کے مخالف ہیں لیکن ہم اس طرح کے اقدامات سے دباو میں نہیں آئیں گے اور نہ ہی میں نے ایک انچ زمین روشنی ایکٹ کے تحت خریدی ہے ،اس دوران پیپلز الائنس کے سربراہ ڈاکٹرفاروق عبداللہ نے آج ووٹروں سے اپیل کی کہ وہ صرف پیپلز الائنس کے امیدواروں کے حق میں ہی ووٹ ڈالیں اور یہ کہ دیگر کسی بھی امیدواروں کےلئے ان کا ووٹ پیپلز الائنس کےلئے نقصان دہ ثابت ہوگا ۔ روشنی اسکینڈل کی تحقیقات پر تبصرہ کرتے ہوئے پیپلز الائنس کے سربر اہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کل اس اسکنڈل کی تحقیقات کو ایک حربہ قرار دیتے ہوئے کہاکہ کہ مرکز اور ریاستی اموارت چلانے والوں کا یہ ہتھکنڈا ہے کہ وہ ان سیاسی لیڈران کو مرعوب کرنا چاہتے ہیں جو کہ ان کے نظریات کی کھل کر مخالفت کرتے ہیں،انہوںنے کہاکہ ایک ایسے وقت میں روشنی ایکٹ کو اسکینڈل کا نام دینا یہ ثابت کرتا ہے کہ ایسی طاقتیں ہیں جو کہ ان لیڈران کو دباو میں لانا چاہتی ہیں یا سرنڈر کرانے پر مجبور کرنے کی کوشش کرتی ہیں،انہوںنے مزید کہاکہ ہم ایسے حربوں سے مرعوب نہیں ہونگے اور میں نے ایک  ( جاری صفحہ نمبر ۱۱پر)
انچ زمین بھی روشنی ایکٹ کے تحت نہیں خریدی ہے ،انہوںنے کہاکہ ہم اپنے نظرئے پر قائم ہیں اورلاکھ جتن کریں ہم مرعوب نہیں ہوسکتے ہیں، پیپلز الائنس ریاست کے تشخص کی واپسی کی بات کررہی ہے اور جو کچھ ہم سے چھینا گیا ہے اس کو واپس لانے کی کوششیں جاری رہیں گی ،انہوں نے مزید کہاکہ روشنی اسکینڈل کے ساتھ فاروق عبداللہ کا نام جوڑنے والے ہماری شبہ کو متاثر کرناچاہتے ہیں میں نے نہ سرینگر اور نہ ہی جموںمیں کوئی زمین خریدی ہے روشنی ایکٹ کے تحت لہذا ہم مرعوب نہیں ہوسکتے ہیں ، جو کوئی بھی اس طرح کی افواہیں پھیلا رہے ہیں وہ ہمارے دشمن ہیں اور وہ چاہتے ہیں کہ جموںوکشمیر کے عوام ایک نہ ہوجائیں اور متحد نہ ہوجائیں اور وہ لیڈران کے درمیان دراڑ ڈالنے کی کوششوںمیں مصروف ہیں ۔ڈاکٹر فارو ق عبداللہ نے کہاکہ افواہیں پھیلانے والے ہمارے اور پورے کشمیر کے دشمن ہوسکتے ہیں۔ انہوںنے کہا کہ پیپلز الائنس ہمارے مخالفین کے ہر حربے کو ناکام بنائیں گے ،انہوںنے اسی دوران ووٹروں سے اپیل کی کہ وہ صرف اور صرف ڈی ڈی سی انتخابات میں پیپلز الائنس کے امیدواروں کو ہی اپنا ووٹ دیں کیونکہ کچھ لوگ پیپلز الائنس کے بارے میں پراکسی امیدوار اٹھانے کی باتیں کرتے ہیں وہ صرف اور صرف کنفیوژن کا شکار ہیںاور لوگوں کو بھی کنفیوژن میں مبتلا کرنا چاہتے ہیں لہذا ووٹروں سے میری اپیل ہوگی وہ ان لوگوں پر کام نہ دھریں جو کہ اس طرح کی افواہیں اڑا رہے ہیں ۔الفا نیوز سروس کے مطابق ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا کہنا تھا کہ وقت کی ضرورت ہے کہ ہمارا ووٹر یہ سمجھ اور جان لے کہ پیپلز الائنس جو لڑائی لڑنے جارہی ہے وہ کافی طویل ہے اور ایسے میں فی الوقت یہ چھوٹے چھوٹے اقدامات ہماری لڑائی میں ہماری جیت درج کراسکتے ہیں۔
 انہوںنے پیپلز الائنس کی طرف سے پراکسی امیدواروں کو کھڑاکرنے کو نکارتے ہوئے کہاکہ پیپلز الائنس نے جو انتخابی امیدوار نامزد کئے ہیںان کے حق میں ہی ووٹ ڈالیں ۔ ڈاکٹرفاروق عبداللہ نے آج سوشل میڈیا پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہاکہ پیپلز الائنس کے لیڈران عوام کے لئے خدمت کےلئے تیار ہیں ،ا ن کا کہنا تھا کہ جو کچھ بھی دیگر لوگ پیپلز الائنس کے مخالف میدان میں اترے ہیں وہ پیپلز الائنس کے کاز کےخلاف اتر ے ہیں،لہذا پیپلز الائنس کے بغیر دیگر امیدواروں کے حق میں ووٹ دینا باعث نقصان ہے ۔انہوںنے کہاکہ ہم چاہتے ہیں کہ ہمارا تشخص واپس ہو یہاں ریاست کا درجہ بحال ہو، دفعہ تین سوستر اور پنتیس اے کی واپسی ہو کل ملا کر ریاست جموںوکشمیر کے تشخص کی بحالی ہو ،یہی پیپلز الائنس کی کاوش ہے اور اسی نعرے کو بنیاد بنا کر ہم میدان میں اتر ے ہیں،انہوںنے کہاکہ میری ووٹروں سے اپیل ہے کہ وہ ہر سطح پر سوچ وسمجھ کر فیصلہ لیں اور ایک جٹ ہو کر پیپلز الائنس کے امیدواروں کے حق میں ووٹ ڈالیں تبھی ہمارا بھلا ہوسکتا ہے ۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا کہنا تھا کہ ہم چاہتے ہیں کہ فی الوقت حالات کے عین مطابق ہی چلنا ہوگا تاہم انہوںنے مزید کہاکہ پیپلز الائنس عوام کے جذبات کی ترجمان کرے گی ۔

مزید دیکهے

متعلقہ خبریں