آرٹیکل 35-Aپر وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کا راجناتھ سنگھ کیساتھ تبادلہ خیال - دہلی روانگی سے قبل گورنر سے صلاح مشورہ ،آج وزیراعظم کیساتھ ملاقات کا امکان نئی دہلی میں قیام کے دوران کانگریس سربراہ سونیا گاندھی کے علاوہ کئی دوسرے اپوزیشن رہنمائوں سے دفعہ 370کو بچانے کیلئے تعاون طلب کیاجائے گا

11 اگست 2017
<p>آرٹیکل 35-Aپر وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کا راجناتھ سنگھ کیساتھ تبادلہ خیال - دہلی روانگی سے قبل گورنر سے صلاح مشورہ ،آج وزیراعظم کیساتھ ملاقات کا امکان نئی دہلی میں قیام کے دوران کانگریس سربراہ سونیا گاندھی کے علاوہ کئی دوسرے اپوزیشن رہنمائوں سے دفعہ 370کو بچانے کیلئے تعاون طلب کیاجائے گا</p>

نئی دہلی /دفعہ35Aکو لیکر جاری سیاسی ہلچل کے بیچ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نئی دلی روانہ ہوگئی ہیں جہاں وہ مذکورہ دفعہ کے تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے وزیر اعظم نریندر مودی اور کانگریس چیرپرسن سونیا گاندھی کے علاوہ کئی مرکزی وزرائ اور مرکزی پارٹیوں کے لیڈران سے ملاقات کرکے ان کا تعاون طلب کریں گی۔محبوبہ مفتی مرکزی لیڈران کو دفعہ کی ممکنہ منسوخی پر اپوزیشن پارٹیوں کے خدشات اور ریاست میں اس کے ممکنہ اثرات کے بارے میں بھی آگاہ کریں گی۔ سپریم کورٹ میں دفعہ35Aکے تحت جموں کشمیر کی خصوصی پوزیشن کو چیلنج کئے جانے سے متعلق کیس کا فیصلہ سنائے جانے سے قبل ریاست کے مین سٹریم اور علیحدگی پسند سیاسی خیموں میں کھلبلی کی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔اس معاملے نے ایک غیر متوقع پیشرفت کے بطور بھاجپا کو چھوڑ کر ریاست کی تمام مین سٹریم سیاسی پارٹیوں کو متحد کردیا جن میں خاص طور پر پی ڈی پی اور نیشنل کانفرنس شامل ہیں۔وسری جانب مین سٹریم اور مزاحتمی حلقوں کے ساتھ ساتھ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے بھی دفعہ 35A کے ساتھ کسی بھی قسم کی چھیڑ چھاڑ کو ناقابل قبول قرار دیا ہے۔وزیر اعلیٰ نے یہاں تک بھی کہا ہے کہ دفعہ35Aکی منسوخی کے بعد ریاست میں ترنگا اٹھانے والا کوئی نہیں ہوگا۔محبوبہ مفتی اس معاملے کو لیکر نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کے دروازے تک بھی گئیں جس دوران ڈاکٹر عبداللہ نے انہیں معاملے کی نسبت وزیر اعظم سے ملنے کا مشورہ دیا۔اس دوران ریاست کی دیگر اپوزیشن پارٹیوں کے لیڈران نے بھی اس حوالے سے وزیر اعلیٰ کے ساتھ ملاقات کرکے انہیں اپنی تشویش اور ریاست پر مرتب ہونے/
 والے منفی اثرات سے بھی آگاہ کیا۔ذرائع نے بتایا کہ ریاست کی مین اسٹریم سیاسی پارٹیوں کے ساتھ مشاورت کے بعد وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی جمعرات کو دوپہر سے پہلے نئی دلی روانہ ہوئیں۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نئی دلی میں قیام کے دوران آج بروز جمعہ وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کریں گی جس دوران دفعہ35Aہی گفتگو کا مرکزی موضوع ہوگا، البتہ ملاقات میں جموں کشمیرسے جڑے دیگر معاملات بھی زیر بحث آنے کی توقع ہے۔پی ڈی پی کے ایک سینئر لیڈر نے بتایا کہ محبوبہ مفتی وزیر اعظم کو دفعہ35Aکو لیکر ریاست کی اپوزیشن پارٹیوں کی طرف سے ظاہر کئے گئے خدشات کے بارے میں آگاہ کریں گی اور ان پر زور دیں گی کہ وہ اس سلسلے میں سپریم کورٹ میں کیس کا مضبوط دفاع کرنے کیلئے بھرپور تعاون کریں۔ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعلیٰ وزیر اعظم کو اس بات کی جانکاری بھی دیں گی کہ دفعہ کی منسوخی کی صورت میں ریاست بالخصوص وادی میں کس طرح کی صورتحال جنم لے سکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ریاستی سرکار نے عدالت عظمیٰ میں کیس کا ہر ممکن دفاع کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس مقصد کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں گے۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ وزیر اعلیٰ اپوزیشن کی سب سے بڑی مرکزی جماعت کانگریس کی چیرپرسن سونیا گاندھی کے علاوہ جنتا دل یونائٹیڈ کے شرد یادو کے ساتھ بھی اسی معاملے کو لیکر ملاقات کریں گی۔ذرائع کے مطابق اس بات کا بھی قوی امکان ہے کہ محبوبہ مفتی اس سلسلے میں دیگر مرکزی پارٹیوں کو اعتماد میں لینے کی کوشش بھی کریں گی جبکہ ان کی کئی مرکزی وزرائ کے ساتھ بھی علیحدہ ملاقاتوں کا امکان ہے۔ اس دوران وزیر اعلی نے کل دہلی میں وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کے ساتھ ملاقات کی اور ان کو حالات و واقعات سے آگاہ کیا ۔وزیر اعلی نے راج ناتھ کو بتایا کہ آرٹیکل 35-Aختم کرنے کی صورت میں کشمیر میں سنگین صورتحال پیدا ہوسکتی ہے ۔نئی دہلی روانگی سے قبل محبوبہ مفتی نے گورنر این این ووہر ہ کے ساتھ ملاقات کی ۔ عدالت عظمیٰ میں زیر سماعت آرٹیکل 35(A)کے بارے میں حزب اختلاف کے لیڈروں کے ساتھ ہوئی بات چیت کے بارے میں جانکاری فراہم کی ،میٹنگ کے دوران گورنر نے انسداد عسکریت کارروائیوں ،امن و قانون کی صورتحال ،تعمیر و ترقی اور پروجیکٹوں کو بروقت مکمل کرنے ،دانشگاہوں کی کار کردگی ،جھیل ڈل کی کفاثت ،بلدیاتی اداروں ،پنچایتوں کے الیکشن کے علاوہ رواں برس کے دوران امر ناتھ یاترا خوش اسلوبی کے ساتھ اختتام ہونے پر ریاستی حکومت کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات پر اطمینان کا اظہار کیا ۔ اے پی آئی کے مطابق نئی دہلی روانہ ہونے سے پہلے وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے راج بھون میں ریاست کے گورنر این این ووہرا کے ساتھ ملاقات کی اور ملاقات کے دوران وزیر اعلیٰ نے گورنر کو عدالت عظمیٰ میں زیر سماعت آرٹیکل 35(A) کو تحفظ فراہم کرنے کے سلسلے میں نیشنل کانفرنس کے سرپرست اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور مختلف سیاسی پارٹیوں کے لیڈروں کے ساتھ ہوئی بات چیت کے بارے میں انہیں آگاہ کیا ۔ اس موقعے پر گورنر نے انسداد عسکری کارروائیوں اور امن و قانون کی صورتحال قائم رکھنے کے سلسلے میں حکومت کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا ۔

تبصرے