کٹھوعہ میں بغیر پایلٹ جاسوس طیارہ پرُ اسرار حالت میں گرکر تباہ

12 اگست 2017
<p>کٹھوعہ میں بغیر پایلٹ جاسوس طیارہ پرُ اسرار حالت میں گرکر تباہ</p>

جموں/بھارتی فضائیہ کا ایک بغیر پائلٹ جاسوسی طیارہ پر اسرار حالات میںکٹھوعہ ضلع کے ایک جنگل میں گر کر تباہ ہوگیا،فضائیہ نے معاملے کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کا حکم دیا ہے جبکہ پولیس اپنی سطح پر چھان بین عمل میں لارہی /
ہے۔ جمعرات اوجمعہ کی درمیانی شب کے کٹھوعہ ضلع میں تحصیل ہیرا نگر کے چھن اروریاں علاقے میں ایک زوردار دھماکے کی آواز سنی گئی۔نمائندے نے پولیس ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ اصل میں فضائیہ کا ایک بغیر پائلٹ چھوٹا طیارہ یعنیUAV علاقے میں پرواز کررہا تھا جس دوران وہ اچانک گر کر تباہ ہوگیا اور اسی کے نتیجے میں دھماکہ ہوا جس کے بعد طیارے میں آگ لگ گئی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ طیارہ معمول کی پرواز پر تھا ،طیارہ رات2بجکر30منٹ پر راڈار سے غائب ہوگیا تھا اور اس کا آخری مقام خانپورتھا۔جمعہ علی الصبح پولیس اسٹیشن راجباغ سے وابستہ ایک ٹیم کے ساتھ ساتھ فضائیہ کے اہلکاروں کا ایک دستہ خانپور پہنچا اور آس پاس کے علاقے چھان مارے لیکن انہیں طیارے کا کوئی سراغ نہیں ملا۔پولیس ذرائع نے بتایا کہ جب یہ اہلکار طیارے کی تلاش میں لڈولی نامی گائوں میں پہنچے تومقامی لوگوں نے انہیں بتایا کہ انہوں نے دوران شب ایک دھماکے کی آواز سنی۔چنانچہ پولیس اور فضائیہ کی ٹیمیں اسی بستی کے متصل جائے واردات پر پہنچنے میں کامیاب ہوئیں اور طیارے کا ملبہ اپنی تحویل میں لے لیا جس کا ایک حصہ جلا ہوا تھا۔اہلکاروں نے نزدیکی علاقوں میں بھی تلاشی کارروائی عمل میں لائی ،تاہم کوئی مشکوک چیز نظر نہیں آئی۔ بعد میں فضائیہ ، پولیس اور انتظامیہ کے سینئر افسران پر مشتمل ایک ٹیم نے بھی جائے واردات کا دورہ کرکے صورتحال کا جائزہ لیا۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ یہ طیارہ بستی سے ایک کلومیٹرسے بھی زیادہ دور ایک جنگل میں حادثے کا شکار ہوا اور گر کر تباہ ہوا ، تاہم اس واقعہ میں کوئی زخمی نہیں ہوا۔فوری طور پر مذکورہ بغیر پائلٹ طیارے کے پر اسرار حالات میں گر کر تباہ ہونے کی وجوہات واضح نہیں ہوسکی ہیں۔ تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ معاملے کی نسبت کیس درج کرکے تحقیقات شروع کردی گئی ہے۔دوسری جانب فضائیہ نے بھی واقعہ کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کے احکامات صادر کئے ہیں۔

تبصرے