کولگام میں بھی حالات خراب ہوگئے، جھڑپوں میں14زخمی اسلام آباد میں تاجر کی مارپیٹ کیخلاف ہڑتال، پتھرائو اور شیلنگ

18 مئ 2017 (06:21)

سرینگر قصبہ کولگام میں اُس وقت تشدد بھڑک اٹھا جب یہاں احتجاجی طلبہ اور فورسز کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔ جھڑپوں میں ایک ویڈ یو جرنلسٹ سمیت14افراد زخمی ہوئے جبکہ قصبہ اسلام آباد میں فورسز اہلکاروں کی مبینہ طور دوکاندار کی مارپیٹ کے خلاف تاجروں نے احتجاجی ہڑتال کی۔ تفصیلات کے مطابق کولگام میں جمعرات کو طالب علموں نے گرفتاریوں کے خلاف سڑکوں پر نکل کر صدائے احتجاج بلند کی۔ڈگری کالج کولگام میں زیر تعلیم طلبہ نے جو نہی ایک احتجاجی مارچ نکالا اور قصبے میں طلبائ کی گرفتاریوں کے خلاف احتجاجی مطاہرے کئے ،تو یہاں تعینات پولیس اہلکاروں نے اُن کا راستہ روکا۔طرفین کے مابین شدید مزاحمت ہوئی۔پولیس وفورسز نے مظاہرین کو تتر بتر کرنے کیلئے ٹیر گیس شلنگ کے علاوہ پائوا شلنگ کی جس پر مظاہرین مشتعل ہوئے اور فورسز پر سنگ باری کی۔پولیس وفورسز نے مشتعل مظاہرین کو تتر بتر کرنے کیلئے پیلٹ فائرنگ کی۔ پولیس وفورسز کی کارروائی کے نتیجے میں ایک ویڈیو جرنلسٹ عامر فیاض سمیت14افراد زخمی ہوئے۔پتھرائو کے نتیجے میں کئی اہلکاروں کو بھی چوٹیں آئیں۔ ذرائع کے مطابق عامر فیاض کے علاوہ تنویر احمد وانی نامی نوجوان کی آنکھوں میں پیلٹ فائر لگے جس کی وجہ سے اُنکی آنکھیں متاثر ہوئیں اور دونوں کو صدر اسپتال سرینگر منتقل کیا گیا۔قصبے میں طلبہ اور پولیس وفورسز کے درمیان جھڑپوں کے نتیجے میں یہاں معمول کی سرگرمیاں متاثر ہوگئیں۔ ادھر جنوبی قصبہ اسلام آباد میں جمعرات کو اُس وقت کشیدگی کی لہر دوڑ گئی جب یہاں مبینہ طور پر فورسز اہلکاروں نے ایک دکاندار کی مار پیٹ کی ،جس پر تاجروں نے احتجاج کے بطور دکانوں کے شٹر نیچے کئے اور احتجاج کر کے ملوثین کے خلاف کارروائی کی مانگ کی۔ہڑتال کے نتیجے میں قصبہ اسلام آباد میں معمول کی سرگرمیاں متاثر ہوگئیں جبکہ یہاں پبلک ٹرانسپورٹ کی نقل وحمل بھی متاثر ہو کر رہ گئی ۔اس دوران یہاں اُس وقت تشدد بھڑک اٹھا جب پولیس وفورسز نے احتجاجی مظاہروں کو تتربتر کرنے کیلئے ٹیر گیس اور پائوا شلنگ کی۔فورسز کی کارروائی کے نتیجے میں پورے قصبے میں افرا تفری پھیل گئی جبکہ نوجوانوں نے مشتعل ہو کر پولیس وفورسز پر خشت باری کی۔پولیس وفورسز نے مشتعل مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے مزید ٹیرگیس شلنگ کی اور سلسلہ کئی گھنٹوں تک جاری رہا ۔بعد اس احتجاج میں طلبہ نے بھی حصہ لیا ۔ قابل ذکر ہے کہ وادی کشمیر میں15اپریل سے طلبہ کے احتجاجی مظاہرے جاری ہیں۔ ادھر وادی کشمیر میں کئی تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل جمعرات کو معطل رہا ۔ایس پی ہائر سیکنڈری اسکول اور ایم پی ہائر سیکنڈری اسکول میں تدریسی عمل معطل رہا ۔جمعہ کو ان دونوں تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل معطل رہنے کا اعلان کیا گیا ہے ۔

تبصرے