سکل ڈیولپمنٹ مضامین کو متعارف کرنیکے عمل میں سرعت لائی جائے الطاف بخاری کا عمل آوری کا جائزہ لینے کیلئے میٹنگ طلب کی

11 اگست 2017

سرینگر/وزیر تعلیم سید محمد الطاف بخاری نے ریاست کے سکولوں ، کالجوں اور یونیورسٹیوںمیں مختلف سکل ڈیولپمنٹ کورسوں کو متعارف کرکے ان پر عمل آوری کرنے کا جائزہ لینے کے لئے افسران کی ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کی صدارت کی۔میٹنگ میں وزیر مملکت برائے تعلیم پریا سیٹھی، پرنسپل سیکرٹری محکمہ اعلیٰ تعلیم ،سیکرٹری محکمہ تعلیم ، وائس چانسلر جموں یورنیور سٹی ، وائس چانسلرز کلسٹریونیورسٹی سرینگر اور جموں، ایجوکیشن انشیٹیو ، این ایس ڈی سی کی سربراہ ، ناظمین تعلیم سرینگر/ جموں ،ناظم محکمہ تکنیکی تعلیم ، مشن ڈائریکٹر آر یو ایس اے ، ڈائریکٹر کالجز ، ڈائریکٹ رلائف لانگ لرننگ کشمیر یونیورسٹی، اڑان اور حمایت کے ناظمین ،نوڈل پرنسپلز اور دیگر متعلقہ افسران موجود تھے۔اس موقعہ پر مختلف یونیورسٹیوں کے وائس چانسلروں نے اپنے اداروں میں شروع کئے گئے سکل ڈیولپمنٹ کورسوں کے بارے میں ایک مفصل پرزنٹیشن پیش کی۔میٹنگ میں بتایاگیا کہ جموں یونیورسٹی نے چند قلیل مدتی کورسوں اور لسانی مضامین کو متعارف کیا ہے جن میں فرانسیسی زبان کا کورس بھی شامل ہے ۔ کلسٹر یونیورسٹی سرینگر نے لسانی مضامین کے لئے ایوننگ سکول شروع کئے ہیں جہاں مختلف زبانیں پڑھائی جارہی ہیں جبکہ کلسٹر یونیورسٹی جموں نے شجرکاری ، چاکلیٹ سازی وغیرہ کورس متعارف کئے ہیں۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ کشمیر یونیورسٹی میں محکمہ تعلیم بالغان کئی سال سے 30مضامین پڑھا رہا ہے ۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ مرکز مزید سکل ڈیولپمنٹ مضامین شروع کرنا چاہتا ہے جس کے لئے مالی معاونت کی ضرورت ہے۔میٹنگ میں مطلع کیا گیا کہ محکمہ تعلیم نے چند کورسوں کی شناخت کی ہے جن میں سیاحت ، سیلف ڈیفنس اور سیکورٹی عنقریب متعارف کئے جارہے ہیں اور ان کورسوں کے لئے ماسٹر ٹرنیز کی بھی شناخت کیا گیا۔میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ ریاست میں 132سکولوں،یں پہلے مختلف پیشہ وارانہ کورسوں میں تربیت دی جارہی ہے۔
س موقعہ پر بخاری نے افسران پر زور دیا کہ وہ ریاست بھر میں سکولوں، کالجوں اور یونیورسٹیوں میں مختلف سکل ڈیولپمنٹ کورسوںکو متعارف کرنے کے عمل میں سرعت لائیں۔ڈائریکٹر تکنیکی تعلیم کی سربراہی میں کمیٹی بھی تشکیل دی گئی ہے جو مختلف کورسوں کو متعارف کرنے کا جائزہ لے گی۔ کمیٹی کو پہلے مرحلے میں قلیل مدتی مضامین سے متعارف کرنے سے متعلق رپورٹ 45دنوں کے اندر پیش کرنے کے لئے کہا گیاہے ۔دوران میٹنگ مختلف تعلیمی ادوار پر طلاب کی کونسلنگ کا معاملہ بھی زیر بحث لایا گیا ۔

تبصرے